شہر میں پانی, کی قلت سے, متعلق, معاملے کی, سماعت
A girl fills up a container with drinking water from a water tanker provided by the state-run Delhi Jal (water) Board, in the Okhla industrial area in New Delhi June 3, 2010. Residents in the area said that they have been depending on water tankers for water for more than a decade due to low water pressure from water pipelines provided by the state government. REUTERS/Adnan Abidi (INDIA - Tags: ENVIRONMENT SOCIETY)

شہر میں پانی کی قلت سے متعلق معاملے کی سماعت

کراچی: سندھ ہائی کورٹ میں واٹر کمیشن نے شہر میں پانی کی قلت سے متعلق معاملے کی سماعت کی۔ شہریوں نے بتایا کہ بلدیہ ٹاؤن میں واٹرہائیڈرنٹ سے پانی فراہم نہیں کیا جارہا

سربراہ واٹر کمیشن جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے بلدیہ واٹر ہائیڈرنٹ میں واٹر بورڈ ملازمین کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کیا۔ کمیشن نے حکم دیا کہ ٹینکر کی قیمت 1200 روپے سے کم کرکے ایک ہزار روپے کی جائے اور 6 سال سے وہاں تعینات ملازمین کا تبادلہ کیا جائے۔
ایم ڈی واٹر بورڈ خالد شیخ نے بتایا کہ جو لوگ چھوٹے کین اور کنستر لاتے ہیں انہیں مفت پانی ملتا ہے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ ادارے کے تمام ملازمین کرپٹ نہیں مگر کئی ملازمین چوری کرتے ہیں۔
کمیشن نے ایم ڈی واٹر بورڈ سے پانی کے شیڈول اور ٹینکر کی قیمت کم کرنے سے متعلق تحریری رپورٹ طلب کرلی اور ہفتہ وار 12 گھنٹے پانی فراہم کرنے کا حکم دیا۔
جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے حکم دیا کہ رینجرز کی نگرانی میں ٹینکرز فراہم کیے جائیں اور صرف رہائشی علاقوں کو پانی دیا جائے۔
ٹھیکیدار اور ایم ڈی واٹر بورڈ نے ٹینکر کی قیمت کم کرنے پر اعتراض کیا تو جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے کہا کہ صدقہ جاریہ سمجھ کر کام کریں کچھ کام نیکی کی نیت سے کرنے چاہئیں۔
سربراہ کمیشن نے ایم ڈی واٹر بورڈ سے کہا کہ آپ کے وال مین جو زندگی گزار رہے ہیں آپ سوچ بھی نہیں سکتے، بیس پچیس وال مینز کی فہرست دے دوں تو آپ حیران رہ جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کورونا وائرس کو شکست دے دی

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کورونا وائرس کو شکست دے دی

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا تیسراکورونا ٹیسٹ منفی آگیا ، وہ 17روز تک …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے