فیصل رضا عابدی, اخراج مقدمہ, اور عبوری ضمانت کی, درخواست, خارج

فیصل رضا عابدی اخراج مقدمہ اور عبوری ضمانت کی درخواست خارج

اسلام آباد :ہائی کورٹ اور انسداد دہشت گردی عدالت نے فیصل رضا عابدی کی اخراج مقدمہ اور عبوری ضمانت کی درخواست خارج کرتے ہوئے انہیں 2 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا

جسٹس محسن اختر کیانی پر مشمتل سنگل بینچ نے فیصل رضا عابدی کی درخواست پر سماعت کیفیصل رضا عابدی نے 8اکتوبر کوتھانہ سیکریٹریٹ اور ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ میں درج مقدمات خارج کرنے کی درخواست دی تھی۔
درخواست پر ہونے والی سماعت کے دوران جسٹس محسن اختر کیانی نے ریمارکس دیے کہ میڈیا نے مذاق بنا رکھا ہے، جس کا جی چاہتا ہےعدلیہ پر کیچڑ اچھالتا ہے، عدلیہ اور چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کو سرعام دھمکیاں دی جارہی ہیں۔
دوران سماعت جسٹس محسن اختر کیانی نے استفسار کیا کہ کون سا ٹی وی چینل تھا؟ اس پر وکیل سید ظہیر حسین شاہ نے بتایا کہ نیا پاکستان نام کا کوئی چینل تھا۔
وکیل نے دلائل دیے کہ 3 ایف آئی آر ایک دفعہ کے تحت درج کرنا غیر قانونی ہے، اس پر جسٹس محسن کیانی نے ریمارکس دیے کہ سزا ایک میں ہی ہوگی، تین میں نہیں۔
عدالت کی جانب سے استفسار کیا گیا کہ کیا فیصل رضا عابدی نے توہین عدالت کی ہے؟ اس پر وکیل نے کہا کہ نہیں ان کے موکل نے توہین نہیں کی سخت الفاظ استعمال کیے تھے۔
اس پر عدالت کے جج نے ریمارکس دیے کہ عدلیہ کو دھمکانے کا رویہ درست نہیں ہے۔
عدالت نے سابق سینیٹر فیصل رضا عابدی کی اخراج مقدمات کی درخواست مسترد کردی۔
سپریم کورٹ اور اس کے ججز کے خلاف نازیبا زبان استعمال کرنے پر سابق سینیٹر فیصل رضا عابدی کے خلاف وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) اور اسلام آباد پولیس نے مقدمات درج کیے تھے۔
اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی عدالت (اے ٹی سی) نے چیف جسٹس کے خلاف نازیبا زبان استعمال کرنے کے معاملے پر فیصل رضا عابدی کی عبوری ضمانت خارج کردی۔
اے ٹی سی کے جج شاہ رخ ارجمند نے فیصل رضا عابدی کی عبوری ضمانت کی درخواست پر سماعت کی۔
سماعت کے دوران پولیس نے عدالت میں موقف اپنایا کہ فیصل رضا عابدی ایک اور مقدمہ میں تھانہ سیکریٹریٹ کی حراست میں ہیں، جس کے بعد عدالت نے پولیس رپورٹ کی بنیاد پر ان کی عبوری ضمانت منسوخ کردی۔
اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی عدالت (اے ٹی سی) نے چیف جسٹس کے خلاف نازیبا زبان استعمال کرنے کے معاملے پر فیصل رضا عابدی کی عبوری ضمانت خارج کردی۔
اے ٹی سی کے جج شاہ رخ ارجمند نے فیصل رضا عابدی کی عبوری ضمانت کی درخواست پر سماعت کی۔
سماعت کے دوران پولیس نے عدالت میں موقف اپنایا کہ فیصل رضا عابدی ایک اور مقدمہ میں تھانہ سیکریٹریٹ کی حراست میں ہیں، جس کے بعد عدالت نے پولیس رپورٹ کی بنیاد پر ان کی عبوری ضمانت منسوخ کردی۔
انسداد دہشت گردی عدالت نے 2 اکتبور کو فیصل رضا عابدی کی درخواست منظور کرتے ہوئے انہیں 11اکتوبر تک عبوری ضمانت دی تھی۔
علاوہ ازیں دہشت گردی کے مقدمے میں فیصل رضا عابدی کو انسداد دہشت گردی عدالت نمبر 2 میں ہتھکڑیاں لگا کر پیش کیا گیا، جہاں جج کوثر عباس زیدی نے ان کا 2 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے انہیں پولیس کے حوالے کردیا۔
عدالت میں پیشی کے دوران فیصل رضا عابدی کا کہنا تھا کہ جھوٹ بول کر جیتنے سے بہتر ہے سچ بول کر بندہ ہار جائے۔
انہوں نےکہا کہ رات مجرموں کے ساتھ گزاری، قانون کی بالادستی کا یہی بڑا ثبوت ہے، حق غالب آکر رہے گا اور باطل مٹ کر رہے گا۔

یہ بھی پڑھیں

نیپرا بجلی کے نرخوں میں ایک روپے 62 پیسے اضافے کی منظوری

نیپرا بجلی کے نرخوں میں ایک روپے 62 پیسے اضافے کی منظوری

اسلام آباد: نیپرا کے ایک ترجمان نے کہا کہ ریگولیٹر کے نئے نرخ وفاقی حکومت …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے