جنوبی کوریا کے سابق صدر کو 15 سال قید کی سزا

جنوبی کوریا کے سابق صدر کو 15 سال قید کی سزا

جنوبی کوریا کے سابق صدر لی میونگ بک کو کرپشن کے الزام میں 15 سال قید اور 13 ارب وون جرمانے کی سزا سنائی گئی ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق جنوبی کوریا کی ضلعی عدالت میں سابق صدر لی میونگ بک پر عائد کرپشن کے الزامات کے کیس کی سماعت ہوئی۔ سابق صدر لی میونگ بک طبیعت کی ناسازی کے باعث عدالت میں حاضر نہیں ہوئے تھے۔

فریقین کی دلائل سننے کے بعد عدالت نے سابق صدر کی غیرموجودگی میں فیصلہ سناتے ہوئے لی میونگ بک کو مجرم قراردیا اور 15 سال قید کی سزا سنادی۔ سابق صدر کو 13 بلین وون ( 1 ارب 41 کروڑ 66 لاکھ 75 ہزار اور 416 پاکستانی روپے ) جرمانہ بھی ادا کرنا ہوگا۔

مقامی عدالت کے جج نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ سابق صدر لی میونگ بک نے الیکٹرانکس کمپنی سام سنگ کے چیئرمین سے معافی کے عوض اربوں وون بطور رشوت وصول کرنے کا اعتراف بھی کیا ہے۔

دوسری جانب سام سنگ کی انتظامیہ نے سابق صدر کو رقم کی فراہمی سے انکار کیا جبکہ 2008 سے 2013 تک صدر کے عہدے پر فائز رہنے والے سابق صدر لی میونگ بک نے بھی اپنے خلاف دائر کرپشن کے مقدمات کو سیاسی قرار دیا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل لی میونگ بک کی پیش رو سابق صدر پارک گُن کو بھی کرپشن کے الزام میں 33 سال قید کی سزا سنائی جا چکی ہے۔

ایران کو دھمکی امریکہ کی بے وقوفی: سابق امریکی وزیردفاع

یہ بھی پڑھیں

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

ریاض: سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے