بھارت نے روس سے فضاعی, دفاعی, نظام خریدنے, کا معاہدہ

بھارت نے روس سے فضاعی دفاعی نظام خریدنے کا معاہدہ

نئی دہلی:دارالحکومت نئی دہلی میں بھارتی وزیراعظم نریندر موودی اور روسی صدر ولادی میر پیوٹن کے درمیان ملاقات ہوئی جس میں جوہری توانائی، خلائی سفر اور معاشی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا

دلچسپ بات یہ ہے کہ ملاقات کے بعد ہونے والی دونوں سربراہان کی مشترکہ پریس کانفرنس میں دفاعی معاہدے کا تذکرہ تک نہیں کیا گیا البتہ حکام نے معاہدہ طے ہونے کی تصدیق کی۔
ایس-400 روس کا سب سے جدید اور زمین سے فضا میں طویل فاصلے تک مار کرنے والا دفاعی نظام ہے۔
چین وہ پہلا ملک تھا جس نے 2014 میں حکومتی سطح پر روس سے یہ میزائل سسٹم خریدا جبکہ روس کی جانب سے بیجنگ کو میزائلوں کی فراہمی بھی شروع کی جاچکی ہے جس پر امریکا گزشتہ ماہ چین پر پابندیاں بھی عائد کرچکا ہے۔
بھارت نے امریکا سے کریمیا کے الحاق اور 2016 کے امریکی انتخابات میں مبینہ طور پر روس کے ملوث ہونے پر اسے پابندی سے استثنیٰ دیے جانے درخواست کی تھی۔

یہ بھی پڑھیں

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

ریاض: سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے