گورنرہاؤسز کھولنے اور گاڑیاں نیلام کرنے سے ملک نہیں چلتے، احسن اقبال

اسلام آباد ہائی کورٹ کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق وفاقی وزیراحسن اقبال کا کہنا تھا کہ ترقیاتی بجٹ پر کلہاڑا مارنے کی خبر زیرِ گردش ہے، موجودہ وقت میں عملاً گزشتہ 6 ماہ سے پاکستان کا ڈویلپمنٹ پورٹ فولیو جامد ہوچکا ہے، جس ملک میں 6 ماہ تک ترقی کا عمل رکا ہوا ہو وہ ملک کس طرح ترقی کرسکتا ہے۔
احسن اقبال کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے ملک کو فائدہ پہنچانے والے منصوبے سی پیک کےحوالے سے بھی ٹھوس لائحہ عمل سامنے نہیں آیا، حکومت چلانا اناڑیوں کا کام نہیں، گورنر ہاؤسز کھولنے اور گاڑیاں نیلام کرکے ملک نہیں چلتے، اورنہ ہی ڈیم چندے کے پیسوں سے تعمیر ہوتے ہیں، دیامیر بھاشا ڈیم کے لیے ہماری حکومت نے 122 ارب روپے جاری کیے اور ڈیم کے لئے زمین بھی حاصل کرلی گئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ حکومت سبسڈی کو ختم کرکے عوام کی مشکلات میں اضافہ کررہی ہے، ہم نے عوام کے لئے جو رعایتیں حکومت کو دی ہیں ان کا بھرپور دفاع کریں گے اور حکومت کے ان اقدامات کی مخالفت بھی کریں گے، ہم نے حکومت کو پہلے 100 دن کھلی چھٹی دی ہے تاکہ بعد میں یہ نہ کہا جائے کہ کام نہیں کرنے دیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں

نیب نے جعلی بینک اکاؤنٹس اسکینڈل میں 22 کروڑ 40 لاکھ روپے برآمد کرکے حکومت سندھ کے حوالے

نیب نے جعلی بینک اکاؤنٹس اسکینڈل میں 22 کروڑ 40 لاکھ روپے برآمد کرکے حکومت سندھ کے حوالے

اسلام آباد: جاوید اقبال نے سندھ کے چیف سکریٹری ممتاز علی شاہ کو 22 کروڑ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے