پاکستان، چین کا اسٹریٹجک تعاون پرمبنی شراکت داری مزید مستحکم کرنے کےعزم کا اعادہ

اسلام آباد:  پاکستان اور چین نے اسٹریٹجک تعاون پرمبنی شراکت داری کو مزید مستحکم کرنے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔ پاکستان کے دورے پر آئے ہوئے چینی وزیر خارجہ وانگ ژی تین نے آج دفتر خارجہ کا دورہ کیا، جہاں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے ان کا استقبال کیا۔

اس موقع پر دونوں وزراء خارجہ کے درمیان ون آن ون ملاقات ہوئی۔

ون آن ون ملاقات کے بعد پاکستان اور چین کے درمیان وفود کی سطح پر مذاکرات کا آغاز ہوا۔

پاکستانی وفد کی قیادت وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی جبکہ چینی وفد کی قیادت وزیر خارجہ وانگ ژی تین نے کی۔

ترجمان دفتر خارجہ کی جانب سے جاری کیے گئے بیان کے مطابق مذاکرات میں چین نے پاکستان کی معیشت کے استحکام کے لیے حمایت کا اظہار کیا۔

دوسری جانب وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاک-چین اقتصادی راہداری منصوبہ نئی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

مذاکرات میں پاک-چین اقتصادی راہداری (سی پیک) منصوبے، ثقافتی تعاون اور خطے کی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ سی پیک حکومت کی اولین ترجیح اور پاکستان کی سماجی اور معاشی ترقی کے لیے اہم ہے۔

چینی وزیر خارجہ کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کو دورہ چین کی دعوت بھی دی گئی۔

مشترکہ پریس کانفرنس

دوطرفہ مذاکرات کے بعد چینی ہم منصب کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ چین کے ساتھ تعلقات خارجہ پالیسی میں انتہائی اہم ہیں، چینی وزیرخارجہ سے ملاقات میں کئی اہم موضوعات پربات چیت ہوئی جب کہ چینی وزیر خارجہ، صدر مملکت، وزیراعظم اور آرمی چیف سے ملاقات کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ سی پیک ہماری حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے، آج کے مذاکرات میں دو طرفہ تعلقات اور عالمی امور پر بات چیت ہوئی، غربت کے خاتمے اور روزگار کے مواقع پیدا کرنے پر بھی بات ہوئی، پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اہم کردار ادا کیا ہے، چین نے دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی قربانیوں کوسراہا۔

شاہ محمود قریشی نےکہا کہ چین نے عالمی برادری پر زور دیا ہے کہ پاکستان کی قربانیوں کو سراہا جائے، پاکستان اپنی سر زمین دہشت گردی کے لیے استعمال ہونے نہیں دے گا۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ تیز رفتار ترقی کا باعث بن رہا ہے، یہ منصوبہ نئی حکومت کی اولین ترجیح ہے، ملک میں چینی باشندوں کی سیکیورٹی کو یقینی بنایا جائے گا۔

اس موقع پر چینی وزیر خارجہ وانگ ژی نے کہا کہ شاہ محمود قریشی کے ساتھ ملاقات مثبت رہی، دورے کا مقصد نئے حکومت کے ساتھ روابط بڑھانا ہے، پاکستان کے ساتھ اسٹریٹجک تعلقات مزید مضبوط کرنا چاہتے ہیں، چین اپنی خارجہ پالیسی کے مطابق پاکستان کی حمایت جاری رکھے گا۔

چینی وزیر خارجہ نے وزیراعظم عمران خان کو نومبر میں چین کے دورے کی دعوت بھی دی۔

ترجمان دفتر خارجہ

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق چینی وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ وہ عمران خان کوبطور گیسٹ آف آنر چین میں ہونے والی انٹرنیشنل ایکسپو میں مدعو کرنا چاہتے ہیں۔

واضح رہے کہ چین کے وزیر خارجہ وانگ ژی گزشتہ روز تین روزہ دورے پر اسلام آباد پہنچے تھے۔

نئی حکومت کے قیام کے بعد چینی قیادت کا یہ پہلا اعلیٰ سطح کا دورہ پاکستان ہے۔

یہ بھی پڑھیں

خواجہ آصف نے وزیر اعظم اور مجھ پر انھیں جانی نقصان پہنچانے کا الزام عائد کیا

خواجہ آصف نے وزیر اعظم اور مجھ پر انھیں جانی نقصان پہنچانے کا الزام عائد کیا

اسلام آباد:عثمان ڈار نے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو خط لکھ کر خواجہ آصف …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے