بات چیت کی کوئی گنجائش نہیں

ترک وزیراعظم بن علی یلدرم نے امریکا پر واضح کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکاسے بہتر تعلقات کا انحصار فتح اللہ گولن کی حوالگی پر ہے اور اس معاملے پر بات چیت کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ پچھلے ماہ کی ناکام بغاوت کے بعدپانچ ہزار سرکاری ملازمین کو برخاست اور 77 ہزار کو معطل کیا جا چکا ہے۔ جن پانچ ہزار سرکاری ملازمین کو ملازمتوں سے برخاست کیا جا چکا ہے ان میں سے تین ہزار کا تعلق فوج سے تھا۔

 وزیراعظم نے کہا کہ شبہ ہے کہ برخاست اور معطل کئے جانے والے ملازمین کا تعلق امریکہ میں مقیم فتح اللہ گولن کی تنظیم سے ہے۔

ترک وزیراعظم نے اعلان کیا کہ امریکی نائب صدر جوبائڈن 24 اگست کو ترکی کے دورے پر آئیں گے۔ ترک وزیراعظم نے ایک بار پھر امریکہ سے مطالبہ کیا کہ وہ فتح اللہ گولن کو ترکی کے حوالے کرے۔
ترک حکومت نے مقامی میڈیا کے ایسے 140 سے زیادہ ایسے ادارے بھی بند کر دئیے ہیں جن پرترک مبلغ کے حامی ہونے کا شبہ تھا۔

یہ بھی پڑھیں

روس کا کیمیائی ہتھیاروں کی نابودی کے لیے لازمی اقدامات پر زور

روس کا کیمیائی ہتھیاروں کی نابودی کے لیے لازمی اقدامات پر زور

روس نے کیمیائی ہتھیاروں پر پابندی کے عالمی معاہدے کے رکن ملکوں کے درمیان تعمیری …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے