بھارت میں جنسی درندگی کا شرمناک ترین واقعہ، جنسی بھیڑیئے نے کسی خاتون کا ریپ نہیں کیا بلکہ اس بار بے زبان ’’کتیا ‘‘ سے ۔ ۔ ۔ شرمناک ترین خبرآگئی

ممبئی: ہندوستان میں خواتین کے ساتھ ساتھ اب بے زبان جانور بھی جنسی درندوں کے ہاتھوں غیر محفوظ ہو گئے ہیں ،خواتین اور معصوم بچیوں کے ساتھ گینگ ریپ کے بعد اب جانوروں کے ساتھ بھی جنسی درندگی کے شرمناک واقعات نے بھارتی معاشرے کا بد نما چہرہ اور واضح کر دیا ،تازہ انتہائی شرمناک واقعہ ممبئی میں پیش آیا جہاں ایک سیکیورٹی گارڈ نے کتیا کے ساتھ مبینہ طور پر ریپ کیا ہے ۔

بھارتی نجی ٹی وی کے مطابق ممبئی کے ایک نجی سکیورٹی گارڈ کا کتیا کے ساتھ مبینہ طور پر ریپ کا معاملہ سامنے آیا ہے جہاں ریپ میں ناکام ہونے پر جنسی بھیڑیئے سکیورٹی گارڈ نے کتیا کے ’’مخصوص اعضا ‘‘ میں لوہے کی راڈ ڈال دی جس سے کتیا کی نازک حالت میں موت واقع ہو گئی، بد قسمت کتیا نے ایک ہفتہ قبل ہی سات کتوروں (بچوں)کو جنم دیا تھا۔

سیکیورٹی گارڈ کی جانب سے اس شرمناک واقعہ کے سامنے آنے پر جانوروں کے حقوق کے حوالے سے کام کرنے والی غیر سرکاری تنظیم ’’نیکاندولی ‘‘ نے کتیا کے ساتھ ریپ اور قتل کا مقدمہ درج کرانے کے لئے مقامی پولیس سٹیشن میں درخواست جمع کرا دی ہے اور کہا ہے کہ ملزم کے خلاف دفعہ 428,429،11اے اور 119اے کے تحت ایف آئی کاٹی جائے تاہم ابھی تک پولیس نے درخواست جمع کرنے کے باوجود مقدمہ درج نہیں کیا جبکہ نجی بلڈنگ کا سیکیورٹی گارڈ بھی اس واقعہ کے بعد فرار ہو چکا ہے۔

جانوروں کے حقوق کی غیر سرکاری تنظیم کے عہدے داروں کا کہنا ہے کہ اس دیش میں آئے روز خواتین اور معصوم بچیوں کے ساتھ ریپ اور عصمت دری کے واقعات اس تواتر کے ساتھ ہو رہے ہیں کہ ہر کوئی خوف کا شکار ہے ،ایسے میں بے زبان کتیا کے ساتھ ایسا شرمناک واقعہ سامنے آنا ہندوستانی معاشرے کی پستی کی انتہا ہے ،ہمیں پتا ہے کہ اس کیس کا کچھ نہیں ہونا کیونکہ جہاں خواتین اور معصوم بچیوں کو جنسی ہوس کا نشانہ بنانے والے درندے آزاد ہوں وہاں ایک کتیا کے ساتھ شرمناک فعل سرانجام دینے والے کو قانون سزا کیا دے گا ؟۔

یہ بھی پڑھیں

امریکہ نے اپنے اتحادی جنوبی کوریا کو بھی دھمکانا شروع کردیا

امریکہ نے اپنے اتحادی جنوبی کوریا کو بھی دھمکانا شروع کردیا

امریکہ نے پہلی بار کھلے بندھوں جنوبی کوریا کو فوجی اخراجات کی ادائیگی کے متعلق …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے