نیشنل ایکشن پلا ن پوری طرح ناکام ہو گیا

کوئٹہ میں تین روز قبل ہونے والے خودکش دھماکے کے بعدہسپتال میں زخمیوں کی عیادت کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انکا کہناتھا کہ اگر حکومت پوری طرح نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کرتی تو دہشت گردی کو روکا جا سکتا تھا ۔نیشنل ایکشن پلان تمام جماعتوں نے ملکر بنایا مگر اس پر عملدرآمد نہیں کیا جا رہا ، دھماکے کے بعد وزیر داخلہ کا زخمیوں کی عیادت کیلئے نہ آنا کئی سوالات کو جنم دے رہا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ دال میں کچھ کالا ہے ۔ وزیر داخلہ سانحہ کوئٹہ پر صرف اوچھل کود کر رہے ہیں ۔

خورشید شاہ نے مزید کہا کہ میاں نواز شریف کو کئی بار کہہ چکا ہوں کہ آپکی استینوں میں سانپ ہیں مگر انہیں اس بات کا اندازہ نہیں ہے ۔ہم سے بہت سے لوگ سوال کرتے ہیں کہ وزیر داخلہ کے رویے کہ پیچھے میاں نواز شریف کا ہاتھ ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ وزارت داخلہ کو سانحہ کوئٹہ کے بعد سوچنا چاہئیے کہ ناکامی کہاں ہے اور اس کا سد با ب کیسے ہو گا ۔”پتہ نہیں وزیر داخلہ اپنی ناکامی پر شرمسار ہے بھی کہ نہیں “۔ان کے ہمراہ اعتزاز احسن اور نفیسہ شاہ بھی موجود تھیں ۔

یہ بھی پڑھیں

بلوچستان, میں ہر سال تھیلیسیمیا, کے 2 ہزار, نئےکیسز سامنے, آرہے ہیں

بلوچستان میں ہر سال تھیلیسیمیا کے 2 ہزار نئےکیسز سامنے آرہے ہیں

کوئٹہ: صوبے میں تھیلیسیمیا کے بڑھتے کیسز کے باعث ایک خاندان کے چار افراد بھی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے