سات سالہ بچے کی تشدد زدہ لاش کھیتوں سے برآمد، کیسے لرزہ خیز طریقے سے قتل کیا گیا، جان کر آپ کی ۔۔۔

مردان کے علاقے بخشالی سے دو روز قبل لاپتہ ہونے والے سات سالہ بچے کی نعش گھر کے قریب واقع گنے کی کھیت سے برآمد کرلی گئی۔ پولیس کے مطابق بخشالی کے ڈگر نامی گاؤں میں حسنین نامی بچہ ہفتے کے دن گھر سے نکلا اور پھر واپس نہیں آیا جس پر گھر والوں نے اس کی تلاش شروع کردی تھی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ مردان ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال سے موصول پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق بچے کے جسم پر معمولی سی چوٹیں بھی ہیں جبکہ اسے گلے میں پھندا ڈال کر قتل کر دیا گیا تھا۔ پولیس کے مطابق بچے کے ساتھ بدفعلی کی گئی یا نہیں اس حالے سے فرانزک لیبارٹی سے رپورٹ موصول ہونے کے بعد ہی حتمی رائے دی جا سکے گی۔ پولیس نے نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔ یاد رہے کہ امسال مردان میں اس نوعیت کا یہ تیسرا واقعہ ہے جہاں چند ماہ قبل گوجر گڑھی کی چار سالہ اسماء زیادتی کے بعد قتل کر دی گئی تھی اور کافی تنقید کے بعد ہی پولیس اسکے قاتل کو گرفتار کرنے میں کامیاب ہوئی تھی جو اس کا قریبی رشتہ دار ہے۔ اسی طرح کچھ ہی عرصہ قبل تمبولک میں حارث نای ایک سات سالہ بچے کو بدفعلی کے بعد قتل کر دیا گیا تھا جس کی نعش کھیتوں سے برآمد کی گئی تاہم پولیس تاحال اس حوالے سے ملزمان کو گرفتار کرنے میں ناکام ہی رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

بی آر ٹی, منصوبہ 30 جون تک, بھی مکمل نہیں, ہو سکتا

بی آر ٹی منصوبہ 30 جون تک بھی مکمل نہیں ہو سکتا

پشاور: بار بار تاریخوں کے باوجود مکمل نہ ہونے اور تعمیراتی کام میں سست روی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے