کراچی، مجلس وحدت و پی ٹی آئی کے مشترکہ امیدوار علی حسین کے الیکشن آفس پر فائرنگ، 5 زخمی

کراچی: شہر قائد کے ضلع ملیر کے صوبائی حلقہ پی ایس 89 میں مجلس وحدت مسلمین اور تحریک انصاف کے مشترکہ امیدوار علی حسین بلوچ کے دفتر پر فائرنگ سے 5 کارکن زخمی ہو گئے۔ تفصیلات کے مطابق کراچی میں ضلع ملیر کے علاقہ داؤد چالی کے صوبائی حلقہ پی ایس 89 میں ایم ڈبلیو ایم اور پی ٹی آئی کے مشترکہ امیدوار علی حسین بلوچ کے انتخابی دفتر پر موٹر سائیکل پر سوار نامعلوم افراد کی فائرنگ کے نتیجے میں 5 کارکن زخمی ہوگئے، جنہیں فوری طبی امداد کیلئے جناح اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

علی حسین بلوچ نے اس حوالے سے میڈیا کو بتایا کہ انتخابی دفتر پر سیدھی فائرنگ کی گئی، جبکہ دفتر پر پیپلز پارٹی والوں نے کلاشنکوف سے فائرنگ کروائی۔ علی حسین نے بتایا کہ کچھ دنوں سے انتخابی دفتر بند کرنے کیلئے دھمکیاں مل رہی تھیں، تاہم اس سلسلے میں شراف گوٹھ پولیس کو آگاہ کر دیا گیا تھا، لیکن اس کے باوجود پولیس کی جانب سے کوئی تحفظ فراہم نہیں کیا گیا۔ دوسری جانب صدر تحریک انصاف کراچی فردوس نقوی نے واقعہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکام تحریک انصاف پر حملوں کا نوٹس لیں، پیپلز پارٹی کی غنڈہ گردی اور لوٹ مار کے دن گنے جا چکے، تاہم عوام 25 جولائی کو لوٹ مار کے تابوت میں آخری کیل ٹھونک دیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

سندھ اور پنجاب, کے نئے ,مالی سال 20-2019 کا بجٹ, آج اسمبلی, میں پیش کیا, جائے گا

سندھ اور پنجاب کے نئے مالی سال 20-2019 کا بجٹ آج اسمبلی میں پیش کیا جائے گا

کراچی : پنجاب کے نئے مالی سال کے بجٹ کا کل حجم 2 ہزار 550 ارب …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے