حوثیوں نے الحدیدہ کی بندرگاہ پر روکا گیا جہاز چھوڑ دیا

اقوام متحدہ(این این آئی) یمن میں قانونی حکومت کی حمایت میں برسرپیکار عرب اتحاد نے کہا ہے کہ حوثی ملیشیا نے الحدیدہ کی بندرگاہ پر ایک جہاز جی میوس کو 62روز تک روکے رکھنے کے بعد چھوڑ دیا ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق ایک بیان میں عرب اتحاد نے کہا کہ الحدیدہ کی بندرگاہ پر4 اور جہاز بھی لنگر انداز ہو چکے ہیں اور ان پر لدا ہوا سامان اتارا جارہا ہے جبکہ بندرگاہ پر4 اور جہاز داخلے کے منتظر ہیں۔ الصلیف کی بندرگاہ پر بھی2 بحری جہاز داخلے کے منتظر ہیں ان میں ایک لنگرانداز ہونے کے انتظار میں ہے۔ادھر اقوام متحدہ کے رابطہ کاری دفتر برائے انسانی امور نے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ مختلف ممالک نے یمن کے لیے ایک ارب 54 کروڑ ڈالر کی امداد دی ہے اور اس میں سعودی عرب کا حصہ سب سے زیادہ ہے۔ جو ممالک یمن کے لیے انسانی امدادی ردعمل منصوبے کا حصہ نہیں ،انھوں نے بھی 19 کروڑ 60 لاکھ ڈالرعطیہ کیے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

افغان صدر پر چیف ایگزیکٹیو کا الزام

افغان صدر پر چیف ایگزیکٹیو کا الزام

افغانستان کے چیف ایگزیکٹیوعبداللہ عبداللہ نے صدر اشرف غنی پر انتخابی مہم کے دوران سرکاری …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے