بشار اسد کا باغیوں کو ہتھیار ڈالنے پر عام معافی کا اعلان

شام میں دہشت گردی کی کارروائیاں شروع ہونے کے وقت سے ہی ہم نے دہشت گردوں کے سامنے یہ آپشن رکھا تھا کہ اگر وہ اپنے ہتھیار زمین پر ڈال دیں تو انھیں عام معافی دے دی جائے گی۔انھوں نے کہا کہ اس وقت بھی اس معافی پر عمل ہو رہا ہے اور تقریبا تین سال سے جودہشت گرد اپنی معمول کی زندگی کی طرف واپس پلٹنے کے لیے ہتھیار ڈال دیتے ہیں انھیں معافی دے دی جاتی ہے۔شام کے صدر نے مزید کہا کہ جو دہشت گرد معمول کی زندگی کی طرف واپس پلٹ آتے ہیں وہ اگر چاہیں تو سیاسی سرگرمیوں اورانتخابات میں بھی حصہ لے سکتے ہیں۔بشار اسد کا یہ اقدام شام میں امن قائم کرنے اور اس ملک میں خونریز تشدد اور جھڑپوں کو ختم کرنے کی ایک کوشش ہے۔واضح رہے کہ اس معافی میں وہ دہشت گردانہ جرائم شامل نہیں ہیں کہ جو دہشت گردی کے خلاف جنگ کے قانون میں آئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

انسٹاگرام نے بیلا حدید کی فلسطین سے متعلق پوسٹ ہٹانے پر معذرت

انسٹاگرام نے بیلا حدید کی فلسطین سے متعلق پوسٹ ہٹانے پر معذرت

امریکا: سپر ماڈل نے اپنی اسٹوری میں انسٹاگرام کی جانب سے پوسٹ ہٹائے جانے کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے