میں نے نہیں نواز شریف نے میرے ساتھ دشمنی کی: چوہدری نثار

اسلام آباد: سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے ایک بار پھر مسلم لیگ ن کے قائد کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ دشمنی میں نے نہیں بلکہ نواز شریف نے میرے ساتھ کی ہے۔

اسلام آباد میں مجلس العلماء اسلام پاکستان کے زیر اہتمام تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن میں ان لوگوں کو ٹکٹ دیے گئے جنہوں نے مجھے کو گالیاں دیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اب میں اپنا راستہ لے چکا ہوں اور واپسی کی کوئی گنجائش باقی نہیں ہے۔

ن لیگ کے ناراض رہنما کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ اسلام پسندوں اور دائیں بازو کی جماعت ہے، مسلم لیگ میرے خاندان اور میرے خون میں ہے لیکن اب مسلم لیگ نظریاتی مسلم لیگ نہیں رہی۔

ان کا کہنا تھا کہ میری قومی اسمبلی کی سیاست کا آغاز 1985میں ہوا اور بطور ممبر اسمبلی جو کام کیا اپنے ضمیر کے مطابق کیا۔

انہوں نے کہا کہ سیاست میں کوئی ایسا کام نہیں کیا جس پر شرمندہ ہوں، اپنی سیاست اللہ اور اس کے رسول کے احکامات پر ڈھا لی ہے۔

سابق وزیر نے کہا کہ میں نے اقوام متحدہ میں جو تقریر کی وہ بھی ریکارڈ پر ہے، میں نے کہا کہ مسلمان دہشتگرد نہیں بلکہ سب سے زیادہ دہشتگردی کا شکار ہیں۔

چوہدری نثار کا کہنا تھا میں نے یو این میں کہا کہ دہشت گردی کی صورتحال نہیں بدلےگی جب تک مغرب اپنی سوچ نہیں بدلےگا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ میں نے سینٹ میں کہا کہ مدرسے دہشت گردی کا مرکز نہیں جس پر اندر سے میری ٹانگیں کھینچی گئیں۔

انہوں نے کہا کہ میں نے مدرسوں اور اسلامی طاقتوں کا دفاع نہیں کیا بلکہ اپنا فرض ادا کیا، میں اسلام پسند سیاست کا داعی ہوں اور جو بھی کلمہ پڑھتا ہو اسے مسلمان سمجھتا ہوں۔

سابق وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ اس وقت عالم اسلام اور پاکستان کو شدید مشکلات ہیں اس لیے تمام علماء اختلافات کو دور کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ سوشل میڈیا پر ناموس رسالت ﷺ پر ایک بہت بڑی یلغار ہوئی، معاملہ وزارت آئی ٹی تھا لیکن نواز شریف نے مجھے سونپا۔

انہوں نے کہا کہ میں نے تمام اسلامی ممالک کے سفیروں کو بلایا، سعودی عرب اور ایران کو بھی اکٹھے بٹھایا، میں نے سب سے مدد مانگی اور سب نے تعاون کیا، فیس بک کے نائب صدر کو بلایا تو چند ہفتوں میں مسئلہ حل ہو گیا۔

چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ ان کا کہنا تھا اس بات پر اطمینان ہے کہ میں نے ایمان پر کبھی سودا نہیں کیا، آئندہ بھی اقتدار ملا تو اسلام پسند قوتوں کے ساتھ کھڑا ہوں گا۔

یہ بھی پڑھیں

2 مغربی مغویوں کا 3 طالبان قیدیوں کے ساتھ تبادلہ موخر

2 مغربی مغویوں کا 3 طالبان قیدیوں کے ساتھ تبادلہ موخر

پشاور: افغان صدر اشرف غنی نے منگل کے روز اعلان کیا تھا کہ وہ طالبان …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے