میئر کراچی وسیم اختر نے سرکاری اسپتال چلانے میں ناکامی کا اعتراف کرلیا

کراچی: کراچی کے میئر وسیم اختر نے اپنی ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں کے ایم سی کے اسپتالوں کو چلانے میں ناکام ہوگیا ہوں اس لئے مخیر حضرات کے ایم سی کے اسپتالوں کو گود لے لیں۔ کراچی کے عباسی شہید اسپتال میں تقریب سے خطاب کے دوران وسیم اختر کا کہنا تھا کہ کے ایم سی کے 13 اسپتال ہیں، جن کی صورتِ حال انتہائی خراب ہے، مجھے نالے صاف کرنے ہیں، کتے مارنے ہیں، اسپتال نہیں چلا سکتا۔

وسیم اختر نے کہا کہ میں کے ایم سی کے اسپتالوں کو چلانے میں ناکام ہوگیا ہوں، مخیر حضرات کے ایم سی کے اسپتالوں کو گود لے لیں۔ وسیم اختر نے مزید کہا کہ کراچی میں آپریشن بہت ہوچکا، اب یہاں امن قائم ہوگیا ہے، اس لئے اب شہر کی ترقی کے لئے کام کرنا ہوگا، کراچی کی آبادی کے حساب سے مزید 10 اسپتالوں کی ضرورت ہے، 8 سال بعد کے ایم سی کے اسپتالوں کے لئے ادویات کی خریداری کے لئے ٹینڈر جاری کئے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

پیپلز پارٹی کو معاشی، انسانی اور جمہوریت کے حقوق کا تحفظ کرنا ہے

پیپلز پارٹی کو معاشی، انسانی اور جمہوریت کے حقوق کا تحفظ کرنا ہے

کراچی: بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی ایسے منصوبے لائی جو غریب کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے