منالی میں اسرائیلی سیاح سے جنسی زیادتی

انڈیا کی شمالی ریاست ہماچل پردیش میں سیاحت کے لیے آنے والی ایک اسرائیلی خاتون کو مبینہ طور پر چلتی گاڑی میں ریپ کرنے کا واقعہ پیش آیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ اتوار کو پیش آیا جب 25 سالہ سیاح منالی سے ایک قریبی قصبے کیلونگ جانا چاہتی تھیں اور غلطی سے مذکورہ کار کو ٹیکسی سمجھ کر اس میں سوار ہوگئیں

مقامی پولیس اہلکاروں کے مطابق کار میں چھ افراد سوار تھے جن میں سے دو نے اس خاتون سے جنسی زیادتی کی۔

پولیس سپرٹنڈنٹ پدم چند نےبتایا کہ اس واقعے کے بارے میں اسرائیلی سفارتخانے کو مطلع کر دیا گیا ہے اور ریپ میں ملوث افراد کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم سی سی ٹی وی فوٹیج کا جائزہ لے رہے ہیں اور ملزمان کی گرفتاری کے لیے پرامید ہیں۔‘

بھارت میں غیر ملکی خواتین سیاحوں سے جنسی زیادتی کے واقعات ماضی میں بھی پیش آتے رہے ہیں۔

منالی انڈیا کا مشہور تفریحی مقام ہے جو مقامی سیاحوں اور غیرملکیوں دونوں میں بہت مقبول ہے تاہم یہاں سیاحوں کی سکیورٹی پر بھی ماضی میں سوال اٹھائے جاتے رہے ہیں۔

سنہ 2013 میں یہاں ایک امریکی خاتون سیاح کے ریپ کا واقعہ بھی پیش آیا تھا۔ اس معاملے میں ایک مقامی عدالت نے نیپال کے تین باشندوں کو 20-20 سال قید کی سزا سنائی تھی۔

انڈیا میں سنہ 2012 میں دارالحکومت دہلی میں ایک طالبہ کے چلتی بس میں ریپ کے بعد ملک بھر میں ریپ کے قوانین سخت کرنے کے بارے میں آواز اُٹھائی گئی تاہم اس کے باوجود ملک بھر میں خواتین اور بچوں کے خلاف جنسی حملوں کا سلسلہ جاری ہے۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستانی بہت پیار اور محبت دینے والی قوم ہے، کانگریس سربراہ شرد پوار

پاکستانی بہت پیار اور محبت دینے والی قوم ہے، کانگریس سربراہ شرد پوار

نئی دہلی: بھارتی نیشنل کانگریس پارٹی کے سربراہ شرد پوار نے کہا ہے کہ پاکستان …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے