عمران خان نے بیٹی سے متعلق ثبوت پیش نہیں کئے، این اے 243 کا فیصلہ جاری

ریٹرننگ افسر نے عمران خان کے این اے 243 سے کاغذاتِ نامزدگی پر اعتراضات کا تحریری فیصلہ جاری کردیا ہے۔ عمران خان کے این اے 243 سے کاغذات نامزدگی پر اعتراضات کی سماعت ہوئی۔ عمران خان کے خلاف اعتراضات جسٹس اینڈ ڈیمو کریٹک پارٹی کے امیدوارعبدالوہاب بلوچ اور محمد جاوید خان نے ریٹرننگ افسر کو جمع کرائے تھے، جس پر دونوں فریقین کے وکلاء کی جانب سے دلائل مکمل ہونے کے بعد ریٹرننگ افسر نے فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔ این اے 243 سے پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کے کاغذات نامزدگی منظور ہونے کے تحریری فیصلے کی کاپی ایکسپریس نیوز نے حاصل کرلی ہے۔تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ عمران خان کے خلاف دو امیدواروں کی جانب سے اعتراضات داخل کئے گئے تاہم اعتراض کنندہ عمران احمد خان نیازی کے خلاف ٹھوس شواہد پیش نہیں کرسکے اور ناہی عمران خان کی سیتا وائٹ سے اولاد سے متعلق کوئی مصدقہ دستاویزات پیش کی گئی.واضح رہے کہ این اے 243 گلشن اقبال سے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان اور ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینئر خالد مقبول صدیقی میں مقابلہ ہوگا جب کہ پاک سرزمین پارٹی کے مزمل قریشی بھی اسی حلقے سے امیدوار ہیں۔ این اے 243 کا حلقہ پی آئی بی کالونی اور گلشن اقبال کے مختلف بلاکس کے ساتھ ساتھ ملحقہ علاقوں پر محیط ہے۔

یہ بھی پڑھیں

پیپلز پارٹی کو معاشی، انسانی اور جمہوریت کے حقوق کا تحفظ کرنا ہے

پیپلز پارٹی کو معاشی، انسانی اور جمہوریت کے حقوق کا تحفظ کرنا ہے

کراچی: بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی ایسے منصوبے لائی جو غریب کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے