طیبہ تشدد کیس؛ مجرمان کی سزا اور جرمانے میں اضافہ

اسلام آباد: ہائی کورٹ نے طیبہ تشدد کیس میں سابق جج خرم علی خان اور اہلیہ ماہین ظفر کی سزا میں دو سال کا اضافہ کردیا۔

 

پاکستان ویوز  کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں طیبہ تشدد کیس کے ملزمان سابق جج خرم علی خان اور اس کی اہلیہ ماہین ظفر کی سزا میں اضافے کی درخواست پر کیس کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے  وفاق کی اپیل منظور کرتے ہوئے ملزم سابق جج خرم علی خان اور اہلیہ ماہین ظفر کی سزا میں دو سال کا اضافہ کردیا اور ملزمان کو پانچ لاکھ روپے جرمانہ بھی عائد کیا گیا۔ عدالت نے راجہ خرم کی سزا ختم کرنے کی درخواست بھی مسترد کردی اور ملزمان کو کمرہ عدالت سے گرفتار کرلیا گیا۔

 

واضح رہے کہ کمسن ملازمہ طیبہ پر تشدد کے ملزمان کی سزا بڑھانے کی استدعا وفاق نے کی تھی اور اب عدالتی فیصلے کی بعد ملزمان کی سزا تین سال ہو گئی ہے۔

 

 

یہ بھی پڑھیں

شاہد خاقان عباسی ایل این جی کیس میں نیب کے سامنے پیش

شاہد خاقان عباسی ایل این جی کیس میں نیب کے سامنے پیش

راولپنڈی: مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں اس وقت کے وزیرپٹرولیم شاہد خاقان عباسی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے