انتخاب سے قبل دھاندلی کا آغاز ہوچکا، تبدیلی ہوکر رہیگی، نواز شریف نے ایسی بات کہہ دی کہ

سابق وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ انتخابات سے پہلے ہی دھاندلی کا آغاز ہو چکا ہے۔ احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہنا ہے کہ ملک میں قبل از انتخابات دھاندلی کا آغاز ہو چکا ہے، آغاز اس دن ہوا جب مجھے مسلم لیگ کی صدارت سے ہٹایا گیا، مجھے زندگی بھر کے لئے نااہل کیا گیا، سینیٹ انتخابات میں ہمارے امیدواروں کو پارٹی ٹکٹ سے محروم کر دیا گیا، کیا کوئی ایسی مثال موجود ہے کہ پارٹی ٹکٹ سے محروم کیا گیا ہو، ہر بات کا سوموٹو نوٹس لیا جاتا ہے لیکن جب (ن) لیگ کے لوگوں کو دوسری جماعتوں میں شامل کیا جاتا ہے، کوئی نوٹس نہیں لیا جاتا۔ صحافی کی جانب سے پوچھا گیا کہ سپریم کورٹ نے آپ کو بلایا ہے کیا کہیں گے، جس پر نواز شریف نے کہا کہ ظفر اللہ صاحب آ رہے ہیں، ان سے مشاورت ہو گی۔ ریحام خان سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ عمران خان بہتر جانتے ہیں، میں بھی اخباروں میں ہی ریحام خان کی کتاب سے متعلق پڑھ رہا ہوں جب کہ مجھے نہیں معلوم یہ کیا معاملہ ہے۔ صحافیوں پر تشدد اور اغوا سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ اس ملک میں کس طرح سے کچھ لوگ آپریٹ کر رہے ہیں، تبدیلی کو کوئی روک نہیں سکتا اور تبدیلی ہو کر رہے گی جو ملک کے لیے ناگزیر ہے۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستان، افغانستان میں ہونے والے حالیہ دہشت گردی بے بنیاد الزامات مسترد

پاکستان، افغانستان میں ہونے والے حالیہ دہشت گردی بے بنیاد الزامات مسترد

اسلام آباد: این ڈی ایس کی جانب سے ایک بیان میں دعویٰ کیا گیا تھا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے