جیل نواز شریف کی منتظر ہے

پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری لاہور پہنچ گئے وہ آج صبح لاہور ایئرپورٹ پر اترے جہاں کارکنوں کی بڑی تعداد نے ان کا استقبال کیا۔ ایئرپورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر طاہرالقادری کا کہنا تھا کہ ڈاکوؤں کو پھر اقتدار کا موقع ملا تو یہ پاکستان سے غداری ہوگی، نوازشریف اپنے کاروبار کیلئے کسی بھی حد کو پار کرسکتے ہیں۔ طاہرالقادری کا کہنا تھا کہ نواز شریف چیخ رہے ہیں کہ انہوں نے 80 پیشیاں بھگتیں جبکہ ماڈل ٹاؤن کے شہدا کے لواحقین نے 220 پیشیاں بھگتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف پاکستان کے دشمنوں کی سرمایہ کار ہیں، نواز شریف بہت جلد اپنے انجام کو پہنچنے والے ہیں، نواز شریف سے احتساب عدالت نے 130 سوال پوچھے، انہوں نے ہر سوال کے جواب میں سیاسی تقریر کی، ان سے پوچھا گیا کیسز کیوں بنے تو نواز شریف نے کہا ایٹمی دھماکا کیا اس لیے بنے۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کی ساری تقرریں جھوٹ پر مبنی ہیں، اب جیل ان کا انتظار کر رہی ہے، صرف شریف خاندان کے خاتمے سے مسئلہ حل نہیں ہوگا، جتنا شریف خاندان کرپٹ ہے اتنا ہی یہ نظام کرپٹ ہے، نواز شریف کے بعد شہباز شریف اور ان کا ٹولہ بھی ہے۔ سربراہ پی اے ٹی کا کہنا تھا کہ نوازشریف نے کبھی زندگی میں ووٹ اور ووٹر کو عزت نہیں دی، یہ اپنے ایم این اے سے 2، 2 سال تک ہاتھ نہیں ملاتے، چور چور ہوتا ہے چاہے کسی پارٹی میں بھی جائے، جنہوں نے آئین و قانون کو یرغمال بنایا سب کی چیخیں نکلیں گی۔ طاہرالقادری کا کہنا تھا کہ شہباز شریف اور ان کے ٹولے نے دن دیہاڑے لاشیں گرائیں اور ان کے ٹولے نے پورے پنجاب کو لوٹا۔

انہوں نے کہا قوم احتساب اور ماڈل ٹاؤن کے شہدا کے مقدمات کے نتائج کی منتظر ہے، انتخابات کے نام پر چور، اُچکے ملک پر قابض ہو جاتے ہیں، کرپٹ سسٹم نے ہی نواز شریف اور شہباز شریف کو جنم دیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ کیا مملکت اس لیے بنائی گئی کہ لٹیرے حکومت کریں، ملک کو لوٹیں، قوم اس تماشے کو دوبارہ ہونے کی اجازت نہیں دے گی، وہ نظام جو گندے لوگوں کو دوبارہ لائے اس کو ٹھوکر مارتا ہوں، اس وقت ووٹ خریدے جاتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

عثمان بزدار, کے ساتھ اختلافات, میں کوئی, سچائی, نہیں

عثمان بزدار کے ساتھ اختلافات میں کوئی سچائی نہیں

لاہور: کچھ فیصلے میری مرضی سے ہوتے تو پی ٹی آئی کو پنجاب میں دو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے