پنجاب اسمبلی میں اراکین ایکدوسرے پہ پل پڑے، ایوان مچھلی بازار

پنجاب اسمبلی کی پانچ سالہ مدت کا آخری اجلاس جھگڑے کی نذر ہو گیا۔ارکان اسمبلی آپس میں گتھم گتھا ہو گئے۔ایوان مچھلی منڈی بن گیا اور ارکان اسمبلی میں تلخ جملوں کا تبادلہ بھی کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق صوبائی اسمبلی میں نواز شریف کے بیان کو اپوزیشن کی جانب سے حرف تنقید بنانے پر حکمران جماعت غصہ میں آ گئی ، اس پر اپوزیشن اور حکومتی ارکان آپس میں گتھم گتھا ہو گئے اور بات ہاتھا پائی تک پہنچ گئی ،جس سے ایوان مچھلی منڈی بن کر رہ گیا۔ دریں اثنا سپیکر پنجاب اسمبلی صرف یہ کہتے سنے گئے کہ آپ کیا کر رہے ہیں ؟ہو کیا گیا ہے؟ آپ سب اپنی اپنی نشستوں پر بیٹھ جائیں۔سپیکر صاحب با ر بار ہاتھ کے اشارے سے صرف یہی کہتے رہے لیکن کسی نے ان کی بات پر کان نہ دھرے۔

یہ بھی پڑھیں

مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ حکمران کشمیر کو بیچ چکے ہیں

مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ حکمران کشمیر کو بیچ چکے ہیں

لاہور: سربراہ جمعیت علمائے اسلام (ف) مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ حکومت روزانہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے