جج کو جوتا مارنے کی سزا، 18 سال قید، 2 لاکھ جرمانہ، جوتا مارا کیوں گیا، جان کر آپ بھی۔۔۔۔۔

سول جج پر جوتا پھینکنے والے ملزم کو انسداد دہشت گردی عدالت نے 18 سال قید اور 2 لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنادی ہے۔ ملتان کی انسدادِ دہشت گردی کی عدالت نمبر ایک میں جج کو جوتا مارنے والے ملزم کے خلاف کیس کی سماعت ہوئی، کیس کی سماعت جج ملک خالد محمود نے کی۔ عدالت نے ملزم کے ایک ہی دن کے ٹرائل کے بعد کیس کا فیصلہ سنا دیا۔ عدالت نے ملزم اعجاز کو جج کو جوتا مارنے کے جرم میں 18 سال قید اور 2 لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنادی۔واضح رہے کہ ملزم اعجاز کو چند روز قبل چوری کے کیس میں سماعت پر لایا گیا تھا اور اس نے سول جج پر جوتا پھینکا تھا۔

یہ بھی پڑھیں

پرویز مشرف کی درخواست منظور کرتے ہوئے خصوصی عدالت کی تشکیل کو غیر آئینی قرار دے دیا

پرویز مشرف کی درخواست منظور کرتے ہوئے خصوصی عدالت کی تشکیل کو غیر آئینی قرار دے دیا

لاہو:رسماعت میں ایڈیشنل اٹارنی جنرل اشتیاق اے خان کے دلائل کے بعد عدالت نے آئین …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے