چیف جسٹس نے وزیراعظم کیلیے ’’فریادی‘‘ کا لفظ استعمال نہیں کیا، ترجمان سپریم کورٹ

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے چیف جسٹس کی جانب سے وزیراعظم کے لیے فریادی لفظ کے استعمال کرنے کی تردید کردی۔ ترجمان سپریم کورٹ نے چیف جسٹس ثاقب نثار سے منسوب بیان کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ چیف جسٹس نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے لیے فریادی کا لفظ استعمال نہیں کیا بلکہ فریادی کا لفظ غلط طور پر چیف جسٹس سے منسوب کیا گیا۔ ترجمان سپریم کورٹ کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس سے منسوب لفظ مکمل طور پر غلط اور گمراہ کن ہے، چیف جسٹس وزیراعظم کا حکومت کے سر براہ کے طور پر احترام کرتے ہیں۔

 

واضح رہے کہ سپریم کورٹ میں مری تعمیرات ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار اور وکیل لطیف کھوسہ کے درمیان وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات پر مکالمہ ہوا، چیف جسٹس نے کہا کہ ہم نے میٹنگ میں کھویا کچھ نہیں بلکہ پایا ہی پایا ہے، آنے والے فریاد سنانے آئے تھے ہم نے کچھ نہیں دیا، آپ اس ادارے اور اپنے بڑے بھائی پر اعتماد کریں، کبھی آپ کو مایوس نہیں کروں گا۔

یہ بھی پڑھیں

مولانا فضل الرحمٰن کی جانب سے تجویز کردہ مارچ سے کسی دباؤ کا شکار نہیں

مولانا فضل الرحمٰن کی جانب سے تجویز کردہ مارچ سے کسی دباؤ کا شکار نہیں

اسلام آباد:وزیراعظم سے ملاقات کرنے والے علما میں اسلامی نظریاتی کونسل (سی آئی آئی)، متحدہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے