افغان تنازع سے پاکستان سے زیادہ کوئی ملک متاثرنہیں ہوا، تہمینہ جنجوعہ

اسلام آباد: سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ کا کہنا ہے کہ افغانستان جنگی معاشیات کا حصہ بن چکا ہے جس نے اسلحہ، منشیات اور دہشتگردی دی۔اسلام آباد میں سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وسطی ایشیا پاکستان کیلئے مواقع رکھتا ہے، تاہم بین الاقوامی گروہوں، عناصر اورشدت پسندوں کا سامنے آنا لمحہ فکریہ ہے، افغان تنازعہ سے پاکستان سے زیادہ کوئی ملک متاثرنہیں ہوا، پرامن اورمستحکم افغانستان پاکستان کے مفاد میں ہے اور افغانستان میں مزید جنگ وجدل کا متحمل نہیں ہوسکتے، امن کیلئے افغان صدرکے حالیہ اعلان کا خیر مقدم کرتے ہیں اورتعاون بھی کریں گے، افغانستان جنگی معاشیات کا حصہ بن چکا ہے جس نے اسلحہ، منشیات اوردہشتگردی دی۔تہمینہ جنجوعہ نے مقبوضہ کشمیرسے متعلق کہا کہ مسئلہ کشمیرکے باعث جنوبی ایشیاء میں ترقی رک گئی ہے، مسئلہ کشمیرکے جلد، منصفانہ، عوامی امنگوں اوراقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل سے ترقی یقینی ہوگی، امید ہے کہ بھارت جلد مسئلہ کشمیرکے پرامن حل کی جانب جائے گا اور تعاون کو یقینی بنانے کیلئے سنجیدہ اقدامات اٹھائے گا۔سیکریٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے کہا کہ چین کا ابھرنا اورسی پیک منصوبہ علاقائی ترقی کا منصوبہ ہے، دنیا یک قطبی سے کثیر قطبی کی جانب بڑھ رہی ہے، سی پیک مشرق وسطی سے وسط ایشیاء تک پاکستان کو پل بنائے گا، عالمی طاقت کا توازن تبدیل ہورہا ہے، خطے کے مابین تعاون کے امکانات انتہائی روشن ہیں۔تہمینہ جنجوعہ نے کہا کہ اقتصادی تعاون تنظیم سے تاپی گیس پائپ لائن منصوبے تک پاکستان سنجیدہ کاوشیں کررہا ہے، تاپی گیس پائپ لائن اورکاسا ایک ہزارمنصوبے بھی ترقی کے سفرکوتیزکریں گے، پاکستان نے سب سے پہلے وسط ایشیائی ریاستوں کوتسلیم کیا، سرد جنگ کے بعد سے وسط ایشیاء اورجنوبی ایشیاء کے مابین کلیدی مواقع ہیں اور روس کے ساتھ تعلقات تیزی سے مستحکم ہو رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

تاجروں و صنعتکاروں کا دباو اور ردعمل کام دکھا گیا

تاجروں و صنعتکاروں کا دباو اور ردعمل کام دکھا گیا

اسلام آباد: ایف بی آر نے انکم ٹیکس افسران کو کاروباری یونٹس و کاروباری مراکز …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے