خادم رضوی کیلئے بری خبر، خصوصی عدالت نے گرفتار کرنے کا حکم دیدیا

اسلام آباد: انسداد دہشتگردی عدالت اسلام آباد نے خادم حسین رضوی اور پیر افضل قادری سمیت فیض آباد دھرنے کے دوران درج ہونے والے مقدمات میں نامزد مفرور ملزمان کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیدیا۔ عدالت نے پولیس کو ملزمان کیخلاف چار اپریل تک حتمی چالان جمع کرانے کا حکم دیدیا۔

انسداد دہشتگردی عدالت کے جج شاہ رخ ارجمند نے فیض آباد دھرنا سے متعلق کیس کی سماعت کی۔ خادم رضوی حسین رضوی سمیت مفرور ملزمان کو پیش نہ کیے جانے پر عدالت نے اظہار برہمی کرتے ہوئے ملزمان کے وارنٹ گرفتاری برقرار رکھے اور حکم دیا کہ مقدمات میں نامزد مفرور ملزمان کو گرفتار کرکے آئندہ سماعت پر عدالت کے روبرو پیش کیا جائے۔

خادم حسین رضوی، افضل قادری اور مولانا عنایت مقدمہ نمبر 345، 334 اور 335 میں نامزد ملزم ہیں۔ سرکاری وکیل شفقات ملک نے عدالت کو بتایا کہ ملزمان کیخلاف چالان مکمل نہیں ہوسکا اس لیے مزید کچھ دن کی مہلت دی جائے۔

عدالت سرکاری وکیل کی استدعا منظور کرتے ہوئے پولیس کو چار اپریل تک حتمی چالان جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔ مسلسل عدم حاضری پر انسداد دہشتگردی عدالت نے پانچ مارچ کو خادم حسین رضوی اور دیگر مفرور ملزمان کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے۔

یہ بھی پڑھیں

آئی ایم ایف کا یہ وفد پاکستان کے دورےمیں اہم ملاقاتیں کرےگا

آئی ایم ایف کا یہ وفد پاکستان کے دورےمیں اہم ملاقاتیں کرےگا

اسلام آباد: آئی ایم ایف کا یہ ایس او ایس مشن ہے ، جو کہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے