کوئٹہ میں فائرنگ سے لاء کالج کے پرنسپل ہلاک ہوگئے

آج علی الصبح نامعلوم افراد کی فائرنگ سے گھر سے کالج جانے والے لاء سکے پرنسپل امان اللہ فائرنگ سے ہلاک ہو گئے۔

تفصیلات کے مطابق آج صبح یونیورسٹی لا ء کالج کے پرنسپل بیرسٹر امان اللہ خان اپنے گھر سے کالج کے لیے نکلے تو کلی ترخہ کے مقاا پر ان کی گاڑی پر نامعلوم مسلح افراد نے شدید زخمی ہوگئے تھے،جنہیں فوری طبی امداد دینے کے لیے قریبی سول ہسپتال منتقل کردیا تھا،جہاں اُن کی جان بچانے کی کوششیں کی گئی مگر وہ جانبر نہ ہو سکے۔

سول ہسپتال کی انتظامیہ کے مطابق مقتول پرنسپل کو 12 گولیاں لگی تھیں،انہیں ہر ممکن طبی امداد دی گئی تاہم خون کے ذیادہ بہہ جانے کے باعث وہ جانبر نہ ہو سکے۔

پولیس کے مطابق لاش کا پوسٹ مارٹم جاری ہے،جائے وقوعہ سے شواہد جمع کر لیے ہیں،تاہم ابھی قتل کی وجوہات کا تعین کرنا ممکن نہیں،پولیس کا کہنا تھا کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد تحقیقات کا دائرہ کار مزید بڑھایا جائے گا،اور ملزمان کو کیفردار تک پہنچایا جائے گا۔

وزیراعلیٰ نواب ثناء اللہ زہری کاپرنسپل لاء کالج کےقتل پردلی رنج وغم کااظہار کیا ہے،انہوں نے پرنسپل کے اہل خانہ کے ساتھ تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے قاتلوں کو گرفتار کر کے کیفر کردار تک پہنچانے کے عزم کا اظہار کیا۔

یہ بھی پڑھیں

خضدار میں قبائلی رہنما نواب امان اللہ کے قافلے پر حملہ

خضدار میں قبائلی رہنما نواب امان اللہ کے قافلے پر حملہ

کوئٹہ: مسلح افراد نے قافلے پر فائرنگ کی جس سے امان اللہ اور ان کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے