پی ٹی آئی اور پی پی پی میں چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کیلئے معاملات طے پاگئے

چیئرمین اور ڈپٹی چیرمین سینیٹ کے لیے تحریک انصاف اور پیپلز پارٹی میں معاملات طے پا گئے ہیں۔ سینیٹ انتخابات کے بعد چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کے لیے رابطہ مہم زور پکڑ گئی ہے، پاکستان پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) دیگر پارٹی سربراہان سے ملاقات کرکے جوڑ توڑ کی کوشش میں مصروف ہیں۔ میڈیا ذرائع کے مطابق تحریک انصاف اور پیپلز پارٹی کے درمیان رابطہ ہوا، جس میں پی ٹی آئی نے پیپلز پارٹی کی جانب سے چیئرمین سینیٹ کے لئے نامزد امیدوار سلیم مانڈوی والا کی حمایت کر دی، جب کہ پیپلز پارٹی نے بھی بلوچستان سے آزاد حیثیت میں جیتنے والے سینیٹر انوارالحق کی بطور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کی حمایت پر آمادگی ظاہر کر دی ہے۔ دوسری جانب اسلام آباد میں مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف سے اتحادی جماعتوں کے سربراہان نے مشترکہ ملاقات کی، جس میں پشتون خوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی، نیشنل پارٹی کے سربراہ میر حاصل بزنجو اور جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان شامل تھے۔ ملاقات کے بعد صحافیوں سے مختصر بات چیت میں سابق اور نااہل وزیراعظم نواز شریف نے چیئرمین سینیٹ کے لیے رضا ربانی کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ رضا ربانی کے نام پر اتفاق نہ ہوا تو اپنا امیدوار لائیں گے۔ ادھر آصف علی زرداری نے جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کی، جس میں انہوں نے میاں رضا ربانی کو چیئرمین سینیٹ بنانے کی نوازشریف کی تجویز کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایسا نہیں چاہتے۔

یہ بھی پڑھیں

میدیکل بورڈ ایک بار پھر خورشید شاہ کا طبی معائنہ کرے گا

میدیکل بورڈ ایک بار پھر خورشید شاہ کا طبی معائنہ کرے گا

اسلام آباد: اس سے قبل خورشید شاہ کو گزشتہ رات پولی کلینک اسپتال لے جایا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے