5 سال کی عمر سے میں اس شرمناک ترین عادت میں مبتلا ہوگئی کیونکہ میرا باپ، نوجوان لڑکی نے اپنا ایسا راز دنیا کو بتادیا کہ لڑکیوں کا کیا لڑکوں کا بھی رنگ اُڑگیا

نیویارک: امریکی میں جنسی لت کا شکار رہنے اور کئی بار خودکشی کی کوشش کرنے والی لڑکی نے بالآخر اپنی اس عادت کی ایسی شرمناک وجہ دنیا کو بتا دی ہے کہ سن کرلڑکیاں تو کیا لڑکوں کا بھی رنگ اڑ جائے گا۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق 30سالہ جیس ڈاﺅنی نامی یہ لڑکی امریکی ریاست ٹیکساس کے شہر آسٹن کی رہائشی ہے۔ اسے اس قدر جنسی لت پڑی ہوئی تھی کہ وہ راہ چلتے ہوئے اجنبیوں کے ساتھ چلی جاتی اور ان کے ساتھ جنسی تعلق استوار کرتی۔ جب وہ اپنے دفتر میں ہوتی تو وہاں فحش فلمیں دیکھتی رہتی تھیں۔

گزشتہ روز جیس نے اپنی بپتا سناتے ہوئے بتایا ہے کہ اسے یہ لت 5سال کی عمر میں پڑ گئی تھی اور اسے یہ لت ڈالنے والا کوئی اور نہیں بلکہ اس کا سگا باپ تھا۔ جیس نے بتایا کہ جب وہ پانچ سال کی تھی تب اس کے باپ نے اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بنانا شروع کر دیا تھا اور دو سال تک وہ اس کے ساتھ یہ انسانیت سوز سلوک کرتا رہا۔ اس کی وجہ سے اسے ایسی لت پڑی کہ کبھی سنبھل نہیں پائی۔ جیس کا کہنا تھا کہ ”اس لت نے میری زندگی کے ہر پہلو کو بری طرح متاثر کیا، مجھے ایسے لگتا تھا جیسے میں پاگل ہو گئی ہوں، میرا خود پر کوئی اختیار ہی نہ رہا تھا،کئی بار میں نے اپنی جان لینے کا بھی سوچا، پھر میری ملاقات ولیم سے ہوئی، جو اب میرا منگیتر ہے۔

اس کے سمجھانے پر مجھے سمجھ آئی کہ میں جنسیت کی عادی ہو چکی ہوں، اسی کے کہنے پر میں ’ریکوری پروگرام‘ میں شامل ہوئی اور طویل علاج اور کونسلنگ کے بعد آج میری اس لت سے جان چھوٹ چکی ہے۔ اب میں اپنے ماضی پر نظر دوڑاتی ہوں تو دہل جاتی ہوں کہ کس طرح میں نے خود کو برباد کیے رکھا۔“

یہ بھی پڑھیں

رابرٹ او برائن امریکا کے نئے مشیر قومی سلامتی مقرر

رابرٹ او برائن امریکا کے نئے مشیر قومی سلامتی مقرر

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی کابینہ میں ایک بار پھر اکھاڑ پچھاڑ کرتے ہوئے حال …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے