اب عدالت کیا کرے، جیل حکام کا شاہ رخ جتوئی کو عدالت میں پیش کرنے سے صاف انکار

جیل حکام نے شاہ زیب قتل کیس کے ملزم شاہ رخ جتوئی کو عدالت میں پیش کرنے سے انکار کردیا۔ ملیر کی جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں شاہ زیب قتل کیس کے ملزم شاہ رخ جتوئی کے خلاف بیرون ملک فرار کیس کی سماعت ہوئی تو جیل حکام نے ملزم کو عدالت میں پیش کرنے سے انکار کردیا جس پر جوڈیشل مجسٹریٹ نے برہمی کا اظہار کیا۔ جیل حکام نے عدالت کو بتایا کہ ملزم سزا یافتہ ہے، اسے سیکیورٹی کے پیش نظر عدالت نہیں لایاجاسکتا۔ ایف آئی اے نے عدالت میں مؤقف اپنایا کہ ملزم شاہ رخ جتوئی کو 2013ء میں ایئرپورٹ سے گرفتار کیا، 27 دسمبر 2017ء کو جعل سازی سے بیرون ملک فرار ہوا تھا۔ ایف آئی اے حکام نے کہا کہ پانچ سال گزر چکے ہیں، ملزمان پر فرد جرم عائد نہ ہو سکی، مقدمہ زیر التواء ہونے پر 5 ملزمان نے بریت کی درخواست دائر کردی۔ جیل حکام نے عدالت کو بتایا کہ ملزم اس کیس میں ضمانت پر اور قتل کیس میں پابند سلاسل ہے۔ عدالت نے جیل حکام کو ملزم شاہ رخ جتوئی کو پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ سیکیورٹی فراہم کرنا جیل حکام کی ذمہ داری ہے۔

یہ بھی پڑھیں

نیب نے پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ کو گرفتار کرلیا

نیب نے پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ کو گرفتار کرلیا

اسلام آباد: قومی احتساب بیورو(نیب) نے پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما سید خورشید شاہ کو گرفتار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے