داعش کے گرفتار ہونے والے دہشتگرد کے ہولناک انکشافات،کس چیز کی منصوبہ بندی کرلی تھی، جان کر سبھی کے رونگٹے کھڑے ہوجائیں

دہشتگرد سیف الاسلام خلافتی نے ابتدائی تفتیش کے دوران انکشاف کیا ہے کہ داعش کا نیٹ ورک پاک افغان سرحد کے قریب کسی نامعلوم مقام سے چلایا جارہا ہے اور اسے بابا جانی نامی دہشتگرد چلا رہا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ دہشتگرد نے انکشاف کیا ہے انہیں گرفتاری سے بچانے کے لئے خاص سافٹ ویئر بناکر دیا گیا تھا اور اس سافٹ ویئر کی وجہ سے وہ خود کو محفوظ تصور کر رہے تھے۔ ایف آئی اے کے ذرائع نے مزید بتایا کہ گرفتار دہشتگرد کے قبضے سے تشدد اور قتل کی کچھ ویڈیوز بھی ملی ہیں جنہیں سوشل میڈیا پر گرفتار دہشتگرد نے اپلوڈ کرنا تھا۔ ایف آئی اے ذرائع کے مطابق گرفتار دہشتگرد کا آبائی تعلق بلوچستان کے ضلع ژوب سے ہے اور اس کے انکشافات کے بعد تحقیقات کا دائرہ خیبر پختونخواہ اور بلوچستان تک بڑھا دیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق کراچی میں دہشت گردوں کے ملنے کا مرکز کٹی پہاڑی کے قریب تھا جب کہ پہلے گرفتار ملزم ایک اور کالعدم تنظیم کے لئے کام کرتا تھا اور اسے اور اس سے پہلے گرفتار خلیل الرحمان کو سوشل میڈیا کی جانب مولوی نور محمد نامی شخص لایا تھا۔

یہ بھی پڑھیں

تاجروں و صنعتکاروں کا دباو اور ردعمل کام دکھا گیا

تاجروں و صنعتکاروں کا دباو اور ردعمل کام دکھا گیا

اسلام آباد: ایف بی آر نے انکم ٹیکس افسران کو کاروباری یونٹس و کاروباری مراکز …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے