بھارت نے نیوکلیئر سپلائرگروپ میں شمولیت کیلیے باضابطہ درخواست دیدی

نئی دلی: بھارت نے نیوکلیئر سپلائرگروپ میں شمولیت کے لیے باضابطہ درخواست دے دی جب کہ نریندرمودی 4 جون کو امریکا کا دورہ کررہے ہیں جہاں وہ کیس کو مضبوط کرنے کی کوشش کریں گے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارت کی جانب سے نیوکلیئرسپلائرگروپ میں شمولیت حاصل کرنے کے لیے باضابطہ درخواست دے دی گئی ہے یہ درخواست نیوکلیئر سپلائر گروپ سے 7 سال مذاکرات کے بعد 12 مئی کو دی گئی جس کے ایک ہفتے بعد ہی پاکستان نے بھی اس گروپ میں شامل ہونے کے لیے درخواست دی۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق بھارت کی شمولیت کا پہلا بڑا امتحان 9 اور 10 جون کو ویانا میں ہونے والے نیوکلیئرسپلائرگروپ کے اجلاس میں ہوگا جس کے بعد نیوکلیئرسپلائرگروپ کی منصوبہ کمیٹی کے ایجنڈے میں شامل ہوگا جب کہ وزیراعظم نریندر مودی اس کیس کو مضبوط بنانے کے لیے 48 ارکان کے ہمراہ 4 جون کو امریکا کا دورہ کررہے ہیں۔

بھارت کو اپنی کوشش کامیاب بنانے کے لیے اب بھی چین کی صورت میں اہم چیلنج درپیش ہے جس نے پاکستان کی وجہ سے اس کیس کو ویٹوکیا ہوا ہے جب کہ اسی سلسلے میں بھارتی صدر پرناب مکھرجی نے 24 مئی کو چائنا کا دورہ بھی کیا لیکن وہاں سے انہیں کوئی واضح جواب نہ مل سکا تاہم چینی حکام نے اس سلسلے میں مذاکرات کی یقین دہانی کرائی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

خلیج میں مزید امریکی فوج بھیجنے پر روس اور چین کا شدید ردِ عمل

خلیج میں مزید امریکی فوج بھیجنے پر روس اور چین کا شدید ردِ عمل

ماسکو: روس اور چین نے امریکا کی جانب سے مشرقِ وسطیٰ میں مزید ایک ہزار فوجیوں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے