یوٹوپین خواب دیکھنا چھوڑ دیں‘

ورپین کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹسک کا کہنا ہے کہ یورپی یونین کو یورپ سے متعلق شکوک و شبہات پر قابو پانے کے لیے ہر چیز مثالی ہونے کے اپنے خوابوں کو ترک کر دینا چاہیے۔

انھوں نے کہا کہ یورپی یونین کے رہنماؤں کو چاہیے کہ وہ سرحدوں کی از سر نو حد بندی کرنے اور بینکوں کی یونین بنانے جیسے عملی اقدامات کرنے پر توجہ دیں۔

ڈونلڈ ٹسک نے خبردار کیا کہ اگر برطانیہ یورپی یونین سے الگ ہوجاتا ہے تو ’اس کے ڈرامائی نتائج برآمد ہوسکتے ہیں۔‘

انھوں نے برسلز میں تاجر برادری سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ’یورپی اقتصادیات کے لیے اس سے برا امکان اور کوئی نہیں ہوسکتا کہ غیر آزاد خیال سیاسی طاقتیں کامیاب ہوں، چاہیے ان کا تعلق بایاں محاذ سے ہو یا دائیں محاذ سے۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں ہر حال میں اس صورت حال سے بچنا ہی ہوگا

اس سے قبل دی ارگنائزیشن آف اکنامک کوآپریشن اینڈ ڈیویلپمنٹ نے کہا تھا کہ اگر برطانیہ یورپی یونین سے الگ ہوجاتا ہے تو معاشی نکتۂ نظر سے اس پر سخت ترین منفی اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔

اس بیان کے تناظر میں ڈونلڈ ٹسک نے برطانیہ کو یورپی یونین میں برقرار رکھنے کے لیے ایک بار پھر سے یہ اپیل کی ہے۔

اس سے قبل عالمی مالیاتی فنڈ نے کہا تھا کہ اگر برطانیہ نے یورپی یونین چھوڑنے کے حق میں ووٹ دیا تو معاشی ترقی پر منفی اثرات پڑیں گے۔

آئی ایم ایف نے یہ بات برطانیہ کی معاشی حالت پر رپورٹ میں کہی ہے۔

مالیاتی فنڈ کا کہنا ہے کہ یورپی یونین چھوڑنے سے برطانیہ میں خاصے وقت کے لیے غیر یقینی صورت حال پیدا ہو جائے گی۔

اس دوران سپین کے وزیراعظم مرینو رجوائے نے بھی خبردار کیا ہے اگر برطانیہ اس ماہ کے آخر میں ہونے والے ریفرنڈم کے ذریعے یورپی یونین سے نکل جاتا ہے تو اس سے برطانوی عوام پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔

میڈرڈ میں اپنی ایک تقریر کے دوران انھوں نے کہا کہ اس سے برطانوی عوام کو دنیا میں معاشی اعتبار سے خوش حال علاقے میں آزادانہ آمد و رفت کا جو حق حاصل ہے وہ اسے کھو دیں گے۔

ایک رپورٹ کے مطابق اس وقت سپین میں تقریباً تین لاکھ برطانوی شہری رہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

بھارت لائن آف کنٹرول پر اشتعال انگیزی کے ساتھ آبی جارحیت پر بھی اتر آیا ہے اور اس نے بڑے سیلابی ریلوں کا رخ پاکستان کی جانب موڑ دیا ہے جس کے باعث پاکستانی دریاؤں میں بڑے پیمانے پر سیلاب کا خطرہ پیدا ہو گیا ہے۔ ترجمان این ڈی ایم اے کے مطابق بھارت نے لداخ ڈیم کے 3 اسپل ویز کھول دیئے ہیں جن کا پانی خرمنگ کے مقام پر دریائے سندھ میں شامل ہو گا۔ سیلاب کے خطرے کے پیش نظر گلگت بلتستان ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی نے الرٹ جاری کر دیا ہے۔ اس کے علاوہ بھارت نے دریائے ستلج میں بھی بڑا سیلابی ریلا چھوڑ دیا ہے۔ ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی پنجاب کے حکام کا کہنا ہے کہ سیلابی ریلہ آج دن 11 بجے ہیڈگنڈا سنگھ والا کے مقام سے پاکستان میں داخل ہو گا اور پھر 30 گھنٹے بعد ہیڈ سلیمان کے راستے بہاول نگر میں داخل ہو گا۔ ترجمان این ڈی ایم اے بریگیڈئیر مختار احمد کے مطابق دریائے ستلج میں بھارتی پنجاب سے آنے والے پانی کے بڑے ریلے کی وجہ سے سیلاب کا خطرہ ہے۔ بریگیڈئیر مختار احمد کا کہنا ہے کہ محتاط اندازے کے مطابق ڈیڑھ سے 2 لاکھ کیوسک پانی پاکستانی حدود میں داخل ہو سکتا ہے۔ پی ڈی ایم اے پنجاب نے ضلع قصور اور اطراف کے اضلاع کی انتظامیہ کو کسی بھی ہنگامی صورتحال کے لیے تیار رہنے کی ہدایت کی ہے۔ بھارت نے سندھ طاس معاہدہ عملاً معطل کر دیا ہے: ڈپٹی کمشنر انڈس واٹر جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان کے ڈپٹی انڈس واٹر کمشنر شیراز میمن نے کہا ہے کہ بھارت کی جانب سے مسلسل آبی جارحیت جاری ہے، اس نے سندھ طاس معاہدے کو عملاً معطل کر دیا ہے۔ شیراز میمن نے کہا کہ بھارت نے ہر قسم کی واٹر ڈیٹا شیئرنگ بند کر دی ہے اور ڈیموں سے پانی کے اخراج پر پیشگی اطلاع نہیں دی، وہ مسلسل سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی کر رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بھارت نے یکم جولائی سے ستمبر تک کا دریاوں کا ڈیٹا بھی نہیں بھیجا، کئی ماہ سے دونوں ملکوں کے شیڈول اجلاس بھی نہیں ہو رہے، بھارتی رویئے سے حکومت کو آگاہ کر دیا ہے۔ دریائے ستلج میں درمیانے اور اونچے درجے کے سیلاب کا خدشہ فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن نے نئی ایڈوائزری جاری کر دی ہے جس کے مطابق دریائے ستلج میں درمیانے اور اونچے درجے کے سیلاب کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔ فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن کے مطابق 20 اور 21 اگست سے گنڈا سنگھ والا پر بہاؤ 80 تا 90 ہزار کیوسک ہونےکا امکان ہے جو ڈیڑھ لاکھ کیوسک تک بھی جا سکتا ہے۔ فورکاسٹنگ ڈویژن کا کہنا ہے کہ 23 اگست سے ہیڈ سلیمانکی پر بھی بہاؤ بڑھنے کا امکان ہے۔ گزشتہ72گھنٹے میں راوی، بیاس اور ستلج کے بالائی علاقوں میں انتہائی شدید بارشیں ہوئیں جس کی وجہ سے بھاکرہ ڈیم اور زیر علاقوں سے آنے والا پانی سیلاب کا باعث بن رہا ہے۔ فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن نے متعلقہ اداروں کو احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔

بھارت کنٹرول لائن پر اشتعال انگیزی کے ساتھ آبی جارحیت پر بھی اتر آیا

بھارت لائن آف کنٹرول پر اشتعال انگیزی کے ساتھ آبی جارحیت پر بھی اتر آیا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے