برطانیہ میں ہم شکل کے بعد یکساں ڈی این اے کے حامل بچے

برطانیہ میں خاتون کے گھر تین بچوں کی پیدائش ہوئی جن کی خاص بات یہ ہے کہ یہ تینوں نہ صرف ایک جیسا ڈی این اے رکھتے ہیں بلکہ ان کی شکل بھی آپس میں ایک جیسی ہی ہے اور والدین ہم شکل بچوں سے خاصے پریشان بھی ہیں۔

قدرتی طور پر پیدا ہونے والے ان  تینوں لڑکوں، رومن، روحان اور روکو کی صورتیں آپس میں ملتی تھیں لیکن ان کی والدہ نے جب ان کا ڈی این اے ٹیسٹ کرایا تو معلوم ہوا کہ تینوں بچے جینیاتی طور پر بھی ایک جیسے ہی ہیں جو ایک نایاب واقعہ ہے کیونکہ 20 کروڑ پیدائشوں میں سے کسی ایک میں ایسا ہوتا ہے کہ 3 بچے یکساں جنس کے پیدا ہوں اور ان کی صورت اور ڈی این اے میں بھی کوئی فرق نہ ہ

جب بچے بڑے ہونے لگے تو ان کی والدہ کی حیرت میں مزید اضافہ ہوتا چلاگیا کہ ان کی صورتیں ایک جیسی ہیں اور تینوں کی شکل آپس میں ملتی ہیں۔ اب ان کی والدہ تینوں بچوں میں مشکل سے ہی تمیز کرپاتی ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ تینوں بچوں کی بھنوؤں کے درمیان پیدائشی طور پر نشانات ہیں جو ان کی شناخت کو مزید مشکل بناتے ہیں۔ اسی طرح ان تینوں پے پاؤں پر بھی پیدائشی علامات ہی

ماں ان بچوں کو اس طرح پہنچانتی ہیں کہ روحان بہت اونچا روتا اور چیختا رہتا ہے، روکو سکون سے بیٹھا رہتا ہے جب کہ رومن ہر شے پر قبضہ رکھتا ہے

یہ بھی پڑھیں

اقوام متحدہ کو کشمیریوں کو بچانے کیلئے آگے آنا ہوگا، شاہ محمود کا یواین سربراہ کو فون

اقوام متحدہ کو کشمیریوں کو بچانے کیلئے آگے آنا ہوگا، شاہ محمود کا یواین سربراہ کو فون

اسلام آباد: بھارت کے زیر قبضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پر وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے