Saudi Arabian billionaire Prince Alwaleed bin Talal sits for an interview with Reuters in the office of the suite where he has been detained at the Ritz-Carlton in Riyadh, Saudi Arabia January 27, 2018, REUTERS/Katie Paul

سعودی عرب: شہزادہ الولید بن طلال 6 ارب ڈالرز کی ادائیگی کے بعد رہا

ریاض: سعودی عرب میں جاری کرپشن کے خلاف کریک ڈاؤن میں گرفتار عرب پتی شہزادے الولید بن طلال 6 ارب ڈالرز کی ادائیگی کے بعد رہا ہو گئے ہیں۔دو ماہ قبل سعودی عرب میں کرپشن کے خلاف کریک ڈاؤن میں شہزادوں سمیت مختلف کاروباری شخصیات کو حراست میں لیا گیا تھا جن میں دنیا کے امیر ترین افراد میں شامل شہزادہ ولید بن طلال بھی شامل تھے۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق بعض سعودی حکومت نے ڈیل کے بعد شہزادہ الولید بن طلال اور شہزادہ ترکی بن ناصر سمیت کئی کاروباری شخصیات کو ڈیل کے بعد رہا کردیا ہے، رہائی پانے والوں میں ایم بی سی ٹی وی کے مالک عبدال الابراہیم، فیشن اسٹور کے مالک فواز الحکیر اور رائل کورٹ کے سابق سربراہ خالد التویجری بھی شامل ہیں۔

شہزادہ الولید بن طلال کے خاندانی ذرائع نے بھی ان کی رہائی کی تصدیق کر دی ہے اور اطلاعات ہیں کہ شہزادہ الولید بن طلال کو سعودی حکومت نے 6 ارب ڈالرز کی ادائیگی کے بعد رہا کیا ہے۔

یاد رہے کہ ولید بن طلال کو سعود ی حکام نے 6 ارب ڈالر ادا نہ کرنے پر فائیو سٹار ہوٹل سے جیل منتقل کر دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں

ایران اور یورپ کے درمیان مذاکرات کا اب تک کوئی نتیجہ برآمد نہیں ہوا ہے، ترجمان وزارت خارجہ

ترجمان وزارت خارجہ نے ایٹمی معاہدے کے بارے میں یورپی ملکوں کے ساتھ اسلامی جمہوریہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے