ترکی کو امریکہ کیساتھ کوئی تنازعہ کھڑا نہیں کرنا چاہیئے، ٹرمپ کی اردگان کو تنبہیہ

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ترک ہم منصب رجب طیب اردگان کو خبردار کیا ہے کہ ترک فوج کو شام میں امریکی فوجیوں سے کوئی تنازعہ کھڑا نہیں کرنا چاہیے۔غیرملکی خبر ایجنسی کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ترک ہم منصب رجب طیب اردگان سے ٹیلی فونک رابطہ کیا اور شام کی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا۔ گفتگو کے دوران امریکی صدر نے شام میں جاری ترک فوجی آپریشن پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ترک فوجی کارروائی سے شام میں ہمارے مشترکہ اہداف کو نقصان پہنچ سکتا ہے، ترکی کو شام میں جاری فوجی کارروائی فوری بند کرنی چاہیے بصورت دیگر یہ اقدام دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی کا باعث بن سکتا ہے۔دوسری جانب ترک صدر طیب اردگان نے امریکی خدشات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ترکی کی جانب سے شام میں کردوں کے خلاف جاری فوجی کارروائی منطقی انجام تک جاری رہے گی، انہوں نے امریکا پر زور دیا کہ وہ شام میں کردوں کی حمایت اور دفاعی مدد کا سلسلہ بند کرے۔

یہ بھی پڑھیں

جرمنی کی, حکومت ایران کے, ساتھ بحران میں ثالثی, کا کردار, ادا کرنا, چاہتی ہے

جرمنی کی حکومت ایران کے ساتھ بحران میں ثالثی کا کردار ادا کرنا چاہتی ہے

برلن: جرمنی کی حکومت ایران کے ساتھ بحران میں ثالثی کا کردار ادا کرنا چاہتی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے