پارلیمان کے لئے جو الفاظ استعمال ہوئے اور جس نے بھی کئے تکلیف دہ ہیں، ایاز صادق

اسلام آباد: اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کا کہنا ہے کہ پارلیمان کے لیے جو الفاظ استعمال ہوئے اور جس نے بھی کیے تکلیف دہ ہیں جب کہ جو سیاستدان ایسی بات کرتے ہیں انہیں اسمبلیوں میں آکر پھر حلف اٹھانا پڑے گا۔

اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کا کہنا تھا کہ ہم نے اسی پارلیمان کی حفاظت کا حلف اٹھایا ہے، پارلیمان کے لیے جو الفاظ استعمال ہوئے اور جس نے بھی کیے تکلیف دہ ہیں، ان الفاظ پر افسوس بھی ہے اور دکھ بھی، ہم خود حلف اٹھاتے ہیں اور خود توڑتے ہیں۔ جو سیاستدان ایسی بات کرتے ہیں، انہیں اسمبلیوں میں آکر پھر حلف اٹھانا پڑے گا، جس اسمبلی میں آنا ہے اسی کی بے توقیری کریں تو افسوسناک ہے۔

ایاز صادق نے کہا کہ ہماری پوری کوشش ہوگی پارلیمنٹ کی عزت کروائیں، یہ مناسب نہیں کہ باہر جو بات ہوئی اس پر ایکشن لیں، ایوان میں یہ بات ہوتی تو شاید کچھ اور طرح سے دیکھتے، پارلیمنٹ کی توہین ادارے کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہے۔ جمہوریت کے علاوہ جو بھی سسٹم آیا وہ سب کے سامنے ہے، تاریخ بتاتی ہے کہ جمہوری سسٹم بہتر تھا یا کوئی اور، جمہوریت کو بار بار اکھاڑا گیا، نہ جانے عوام کی رائے کو کب اہمیت دی جائے گی، یہ عوام کا حق ہے کہ فیصلہ کریں کون ٹھیک ہے اور کون غلط، اگر کسی اور طرف جائیں گے تو عوام کے حق پر قدغن ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں

بجلی چوری, پر, قابو پانے سے, اٹھاون ارب روپے, حاصل ہوئے

بجلی چوری پر قابو پانے سے اٹھاون ارب روپے حاصل ہوئے

اسلام آباد: بجلی کے بلوں کی وصولی میں اکیاسی ارب روپے کے اضافہ پر وزیراعظم …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے