افغان قیادت مفاہمتی عمل کے لیے پاکستان پر دباؤ بڑھانا چاہتی ہے، امریکا

نیویارک: اقوام متحدہ میں امریکی مندوب نکی ہیلی نے کہا ہے کہ افغانستان چاہتا ہے کہ طالبان کے ساتھ امن مفاہمتی عمل کو آگے بڑھانے کےلئے عالمی برادری پاکستان پر دباؤ بڑھائے۔اقوام متحدہ میں امریکا کی مستقل مندوب نکی ہیلی نے سلامتی کونسل کے خصوصی وفد کے ساتھ افغانستان کے 2 روزہ دورے کے بعد نیویارک میں اقوام متحدہ کے دفتر میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغان حکام نے مفاہمتی عمل میں اتفاق رائے کے لیے عالمی برادری سے پاکستان پر دباؤ بڑھانے کی خواہش کا اظہار کیا ہے جبکہ پاکستان پراپنا رویہ تبدیل کرنے پر بھی زور دیا ہے۔نکی ہیلی کا کہنا تھا کہ اگرچہ افغانستان سمجھتا ہے کہ پاکستان افغانستان کے امن کی پیشکش کی حمایت نہیں کرتا پھر بھی افغان حکومت کو یقین ہے کہ طالبان مذاکرات کی میزپر آجائیں گے۔ افغانستان سمجھتا ہے کہ وہ خطےمیں امن کےلئے پاکستان کی طرف 10 قدم بڑھتا ہے اور پاکستان 10 قدم پیچھے ہٹ جاتا ہے۔واضح رہے کہ اقوام متحدہ میں امریکا کی مستقل مندوب نکی ہیلی سمیت اقوام متحدہ کے سلامتی کونسل کے خصوصی وفد نے افغانستان کا2ر وزہ دورہ کیا ہے، جس میں افغان صدراشرف غنی سمیت دیگر حکام سے ملاقات کی اورافغانستان سمیت خطے کو درپیش سیکیورٹی کے مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں

مقبوضہ کشمیر میں مظالم، کینیڈا کا بھارتی فوجیوں کو ویزہ دینے سے صاف انکار

مقبوضہ کشمیر میں مظالم، کینیڈا کا بھارتی فوجیوں کو ویزہ دینے سے صاف انکار

اوٹاوا: مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم کے بعد کینیڈا نے سابق بھارتی فوجی افسران …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے