انتظار قتل کیس: وزیراعلیٰ سندھ کا عدالتی تحقیقات کرانے کا اعلان

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے انتظار قتل کیس کی عدالتی تحقیقات کرانے کا اعلان کردیا۔ ترجمان وزیر اعلیٰ کے مطابق مراد علی شاہ نے مقتول کے والد سے ٹیلی فون پربات چیت کے دوران کہا کہ وہ لواحقین کی تکلیف سمجھتے ہیں اور جس طرح انہیں اطمینان ہوگا ویسا ہی کیا جائے گا۔

ترجمان نے بتایا کہ عدالتی تحقیقات کا فیصلہ مقتول کے والد کی خواہش پر کیا گیا ہے۔ دوسری جانب میڈی کو لیگل رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ انتظار کی موت صرف ایک گولی لگنے سے ہوئی۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ کان کے پیچھے لگنے والی گولی سرسے پار ہوگئی اور انتظار کی موت کی وجہ بنی۔ 19 سالہ نوجوان کے والدین نے چیف جسٹس آف پاکستان اور آرمی چیف سے انصاف کی اپیل کی تھی۔

انتظار کے والد نے کہا تھا کہ پولیس کا محکمہ ریاست کا حصہ ہوتا ہے لیکن پولیس قتل کو حادثے کی شکل دینے کی کوشش کررہی ہے۔ انتظار کو اتوار کے روز کراچی کے علاقے ڈیفنس میں فائرنگ کرکے جاں بحق کردیا گیا تھا۔

ابتدائی طور پر پولیس کا کہنا تھا کہ نوجوان کو نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے فائرنگ کرکے ہلاک کیا تاہم بعدازاں یہ انکشاف ہوا کہ انتظار کی گاڑی پر اینٹی کار لفٹنگ سیل کے اہلکاروں نے فائرنگ کی تھی جس کی وجہ اشارہ دینے کے باوجود گاڑی نہ روکنا بتایا گیا۔

گزشتہ روز واقعے میں ملوث 8 اہلکاروں کا جسمانی ریمانڈ منظور کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں

فائر بریگیڈ کے عملےنے آگ بجھانے سے انکار کردیا

فائر بریگیڈ کے عملےنے آگ بجھانے سے انکار کردیا

کراچی: شارع فیصل پی ای سی ایچ ایس سوسائٹی بلاک 6 میں ایک کمپنی کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے