مانسہرہ میں حجاموں کو داڑھی کے غیر اسلامی ڈیزائن نہ بنانے کی دھمکی

خیبر پختونخوا کے ضلع مانسہرہ میں پمفلٹس تقسیم کئے گئے ہیں، جس میں نائیوں کو دھمکی دی گئی ہے کہ وہ گاہکوں کی داڑھیوں کے غیر اسلامی ڈیزائن نہ بنائیں بصورت دیگر نتائج ذمہ دار وہ خود ہونگے۔ یہ پمفلٹس انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ نامی ایک گروپ نے تقسیم کئے ہیں۔ اس گروپ کی جانب سے نائیوں کو خبردار کیا گیا ہے کہ وہ گاہکوں کی داڑھیوں کو فرنچ یا ایل شکل میں بنانے سے باز رہیں اور یہ اعتراض کیا گیا ہے کہ اس طرح کی داڑھی تراشنا غیر اسلامی عمل ہے۔ پمفلٹ میں دھمکی دی گئی کہ اگر کوئی بھی نائی ان ہدایات کی خلاف ورزی کرتے پایا گیا تو اس سے 15 دن میں دکان خالی کرالی جائے گی۔ رپورٹس کے مطابق ایک ماہ قبل ان ہدایات کی خلاف ورزی پر ہجوم نے ایک نائی کی دکان پر حملہ کردیا تھا اور بعد میں اس نے انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کے مقامی اراکین سے بات چیت کرکے معاملہ حل کرلیا تھا، لیکن اس دن کے بعد سے اکثر نائیوں نے داڑھیوں کے اسٹائل بنانا بند کردیئے ہیں۔ ایک نائی نے میڈیا کو بتایا کہ ان ہدایات کی مبینہ خلاف ورزی پر پہلے ہی 2 دکانیں بند کی جاچکی ہیں۔

انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کے ہزارہ ڈویژن کے صدر قاری وصی الرحمٰن نے تصدیق کی ہے کہ ضلع مانسہرہ کے اکثر علاقوں میں ان کی تنظیم نے پمفلٹ تقسیم کئے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ مذکورہ ہدایات پر پہلے مانسہرہ میں عملدرآمد کرایا گیا، جس کے بعد اسے صوبے بھر میں عمل میں لایا جائے گا اور پھر پورے ملک میں اس کا نفاذ ہوگا۔ انہوں نے خبردار کیا کہ جس کسی نے بھی ہدایات کی خلاف ورزی کی وہ نتیجے کا خود ذمہ دار ہوگا، جس میں علاقے میں کاروبار کی بندش بھی شامل ہے۔ قاری وصی نے یہ مزید دعویٰ کیا کہ ان کے اس مقصد میں کسی بھی حکومتی عہدیدار یا محکمہ پولیس نے اب تک رکاوٹ بننے کی کوشش نہیں کی۔ دوسری جانب ضلعی انتظامیہ نے ان تمام دعووں کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ مانسہرہ میں اس قسم کا کوئی بھی ہدایت نامہ یا پمفلٹس تقسیم نہیں کیا گیا اور اس معاملے پر مزید کوئی رائے دینے سے انکار کردیا۔

یہ بھی پڑھیں

پشاور ہائیکورٹ نے نیب کو کیپٹن (ر) صفدر کی گرفتاری سے روک دیا

پشاور ہائیکورٹ نے نیب کو کیپٹن (ر) صفدر کی گرفتاری سے روک دیا

پشاور: پشاور ہائیکورٹ کے احکامات کی روشنی میں نیب نے محمد صفدر کو 18اکتوبر کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے