سعودی فوجی اتحاد میں پاکستان کی شمولیت منظم سازش ہے، علامہ ناصر عباس جعفری

اسلام آباد مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ 39 رکنی امریکی زیر سایہ مسلکی فوجی اتحاد میں پاکستان کا شامل ہونا ملک کو ایک اور دلدل میں دھکیلنے کی سازش کا حصہ ہے، اس عمل سے ریاست کو ناقابل تلافی نقصان پہنچے گا، ملک میں خارجہ پالیسی بنانے والے ماضی کے اقدامات سے سبق سیکھیں، قوم تاحال افغان وار کا قرض نہیں اتار سکی۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی سیاسی و مذہبی جماعتیں اس متنازعہ اتحاد سے پاکستان کو باہر نکالنے میں اپنا کردار ادا کریں، ہم پاکستان میں مشرق وسطی کی پراکسی وار کو امپورٹ کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دینگے۔

ان کا کہنا تھا کہ یمن کے مظلوم عرب مسلمان بچوں عورتوں اور بے گناہوں کے قاتل سعودی اتحاد سے مسلم اُمہ کی خیر کی توقع رکھنے والے افغان وار کے نتائج کو سامنے رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اور اسرائیل اسی مسلکی اتحاد کے ذریعے مسلم امہ کو تقسیم کرنے میں مصروف ہیں، مشرق وسطی میں داعش کے خالق امریکی اتحادیوں کے شکست کے بعد 39 رکنی مسلکی اتحاد شیطانی قوتوں کا دوسرا حربہ ہے، پاکستان کی بقا و سلامتی کا تقاضا ہے وہ ایسے فرقہ وارانہ اتحاد سے دور رہے۔

یہ بھی پڑھیں

برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ آج پاکستان پہنچ رہے ہیں

برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ آج پاکستان پہنچ رہے ہیں

اسلام آباد: برطانوی شاہی جوڑے کے دورے سے متعلق شاہی محل نے رواں برس جون …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے