قرضوں میں اضافے سے روپے کی قدر کم ہورہی ہے

بین الاقوامی ریٹنگ ایجنسی موڈیز نے کہا ہے کہ پاکستان پر واجب الادا قرضوں کا حجم ملک کے کل جی ڈی پی کا 63.5 فیصد ہوگیا ہے۔ قرضوں میں اضافے سے روپے کی قدر کم ہورہی ہے۔ عالمی ریٹنگ ایجنسی موڈیز کے مطابق کسی بھی ملک کے حکومتی قرضوں میں اضافہ سے ایکسچینج ریٹ پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں اور پاکستان بھی اسی صورتحال سے گزررہا ہے۔ موڈیز کا کہنا ہے آئی ایم ایف پروگرام کے تحت پاکستان کے مالی خسارے میں کمی متوقع ہے لیکن خسارے میں چلنے والے اداروں کی نجکاری میں تاخیر سے آئی ایم ایف پروگرام کے تحت ہونے والی معاشی اصلاحات متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔ پاکستان کا مالی خسارہ ساڑھے پانچ فیصد ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ملکی محصولات کا 33.2 فیصد حصہ قرضوں کی ادائیگی میں صرف ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری میں 2 ماہ میں 58 فیصد تک کمی

براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری میں 2 ماہ میں 58 فیصد تک کمی

کراچی: اسٹیٹ بینک کی جانب سے جاری ہونے والے ڈیٹا کے مطابق جولائی اور اگست …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے