خیبر پختونخوا حکومت کا افغانیوں کی غیر قانونی آمدورفت روکنے کا فیصلہ ، عملدرآمد یکم جون سے ہو گا

پشاور: خیبر پختونخوا حکومت نے صوبے میں افغانیوں کی غیر قانونی آمد ورفت روکنے کا فیصلہ کر لیا جس پر عملدرآمد یکم جون سے شروع ہو گا ۔
 صوبائی حکومت نے افغانیوں کی غیر قانونی آمدورفت روکنے کا حتمی فیصلہ کر لیا ہے اور اس ضمن میں وزیر اعلیٰ پرویز خٹک اور گورنر اقبال ظفر جھگڑا کی قیادت میں وفد بہت جلد کابل کا دورہ بھی کرے گا ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت نے ایپکس کمیٹی میں افغانیوں کی نقل و حمل روکنے کا فیصلہ کیا تھا جس میں اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا تھا کہ پاکستان اس معاملے پر کابل کو اعتماد میں لے گا ۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ فیصلے پر عملدرآمد یکم جون سے طورخم بارڈر سے شروع ہو گا ۔ فیصلے پر عملدرآمد سے افغانستان کے راستے کوئی بھی فرف بغیر دستاویزات کے پاکستان میں داخل نہیں ہو سکے گا ۔

یہ بھی پڑھیں

صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لیے سیکورٹی پلان مرتب

صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لیے سیکورٹی پلان مرتب

پشاور: پولیس کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق 20 جولائی کو ضلع …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے