سعودی عرب نے نائن الیون حملوں سے متعلق الزام کی صورت میں امریکا کو خبردار کردیا

واشنگٹن: سعودی عرب کا کہنا ہے کہ اگر امریکا نے نائن الیون کے حملوں کا ذمہ دار قرار دینے کے حوالے سے کوئی قانون منظور کیا تو امریکا میں موجود اپنے اربوں ڈالر کے اثاثوں کو فروخت کردیں گے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سعودی عرب نے امریکا کو خبردار کیا ہے کہ سعودی عرب کو نائن الیون کے حملوں کا ذمہ دار قرار دینے کے حوالے سے اگر کوئی قانون یا بل منظور کیا گیا تو سعودی عرب امریکا میں اپنے اربوں ڈالر کے اثاثوں کو فروخت کر دے گا۔ خبر ایجنسی کے مطابق سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے گزشتہ ماہ دورہ امریکا میں امریکی حکام کو خبردار کیا تھا کہ اگر امریکا میں موجود سعودی اثاثوں کو منجمند کرنے کے حوالے سے کوئی بل لایا گیا تو سعودی عرب اپنے اثاثوں کو  فروخت کردے گا جب کہ امریکی اخبار کا کہنا ہے کہ اوباما انتظامیہ کانگریس کو قائل کرنے میں مصروف ہے تاکہ بل کو روکا جاسکے۔

واضح رہے کہ اس وقت امریکا میں سعودی عرب کے 750 ارب ڈالر کے اثاثے موجود ہیں جب کہ امریکی صدر براک اوباما بدھ کو سعودی عرب جائیں گے جہاں وہ سعودی فرماں رواں شاہ سلمان سمیت دیگر اعلیٰ سعودی حکام سے ملاقاتیں کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں

افغانستان: اشرف غنی کی مدت صدارت میں توسیع

افغانستان: اشرف غنی کی مدت صدارت میں توسیع

افغانستان کی عدالت عالیہ نے آئندہ صدارتی انتخابات کے انعقاد تک محمد اشرف غنی کی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے