پاناما لیکس؛ رضا ربانی نے کمیشن کی سربراہی سے معذرت کرلی

اسلام آباد: چیرمین سینیٹ رضا ربانی نے پاناما لیکس کی تحقیقات کے لئے کمیشن کا سربراہ بننے سے معذرت کر لی۔

چیرمین سینیٹ رضا ربانی کا اپنے ایک بیان میں کہنا تھا کہ پاناما لیکس کی تحقیقات کے لئے کمیشن کے سربراہ کے طور پر نام تجویز کرنے پر قائد حزب اختلاف خورشید شاہ کا شکر گزار ہوں لیکن اس وقت مناسب نہیں ہوگا کہ میں بطور چیرمین سینیٹ اس کمیٹی میں شامل ہوں کیونکہ پارلیمانی کمیٹی کے موثر ہونے سے متعلق میرا ایک نظریہ ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ میں پارلیمنٹ بالخصوس سینیٹ کے حقوق کا کسٹوڈین ہوں اور کمیشن کی سربراہی کرنے سے مفادات کا تنازع پیدا ہونے کا خدشہ ہے۔

رضا ربانی نے مزید کہا کہ پاناما لیکس کی تحقیقات کے لیے حقائق تک پہنچنا پیچیدہ مرحلہ ہے کیونکہ وائٹ کالر کرائم میں مہارت درکار ہوتی ہے جو میرے پاس نہیں ہے، کسی ایسے شخص کا نام تجویز کیا جائے جسے متعلقہ شعبے میں مہارت ہو۔

واضح رہے کہ حکومت کی جانب سے پاناما لیکس کی تحقیقات کے لئے جسٹس ریٹائرڈ سرمد  جلال عثمانی کا نام تجویز کیا گیا تھا جسے پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف نے مسترد کردیا تھا۔ خورشید شاہ نے تو کمیشن کی سربراہی کے لئے حکومت کو رضا ربانی کا نام بھی تجویز کردیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں

ان تمام تنظیموں, کا, پاکستان تحریک انصاف سے, اب کوئی تعلق, نہیں

ان تمام تنظیموں کا پاکستان تحریک انصاف سے اب کوئی تعلق نہیں

اسلام آباد: پارٹی کے مرکزی سیکریٹری جنرل ارشد داد خان کے دستخط کے ساتھ بدھ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے