آف شور کمپنیوں کا قیام اور ان میں سرمایہ کاری غیر قانونی نہیں :بیرسٹر ظفر اللہ خان

اسلام آباد : وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے قانون بیرسٹر ظفر اللہ خان نے کہا ہے کہ آف شور کمپنیوں کا قیام اور دیار غیر میں کمائی گئی دولت کی بیرون ممالک میں سرمایہ کاری کا قانونی ذریعہ ہے۔

نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے  بیرسٹر ظفر اللہ خان کہنا تھا  کہ اس سے متعلقہ تمام امور کی تفصیلات بتا چکے ہیں اور پانامہ دستاویزات میں کچھ نیا نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی قوانین کے مطابق آف شو کمپنیوں کا قیام غیرقانونی نہیں ہے، صرف بلیک منی کی صورت میں کمائی ہوئی دولت ہی غیرقانونی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم محمد نواز شریف پہلے ہی واضح کرچکے ہیں پاکستان سے کوئی بھی پیسہ آف شور کمپنیوں کے قیام کیلئے بیرون ملک منتقل نہیں کیا گیا ہے، حکومت کو مکمل اختیار ہے کہ وہ اس حوالے سے انکوائری کرسکتی ہے۔ انہوں نے وزیراعظم  کی جانب سے جوڈیشل کمیشن کے قیام  کو سراہتے ہوئے   اسے ملکی مفاد کیلئے خوش آئند قرار دیا۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستانی میڈیا ایک طاقتور میڈیم ہونے کے باوجود اب بھی کمزور ہے

پاکستانی میڈیا ایک طاقتور میڈیم ہونے کے باوجود اب بھی کمزور ہے

اسلام آباد: پاکستانی میڈیا کے چار میں سے تین میڈیمز میں جو میڈیا ہاؤسز پچاس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے