پاک فوج کے سربراہ کی ایرانی وزیر خارجہ سے ملاقات، دونوں ممالک کے درمیان تعاون کے فروغ پر اتفاق

تہران:  اسلامی جمہوری ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف اور پاکستانی فوج کے سربراہ قمر جاوید باجوہ نے تہران میں ملاقات کی اور دونوں ملکوں کے درمیان تعاون کے فروغ پر تبادلہ خیال کیا۔ پاکستانی فوج کے سربراہ اور ایران کے وزیر خارجہ نے پیر کے روز ہونے والی اس ملاقات میں باہمی دلچسپی کے سبھی معاملات پر بات چیت کی۔ جنرل قمر جاوید باجوہ اور جواد ظریف کے درمیان ملاقات میں سرحدی سکیورٹی، انسداد منشیات نیز دہشت گردی و انتہا پسندی کی روک تھام جیسے معاملات زیر غور آئے۔ دیگر ذرائع کے مطابق  آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ تین روزہ دورے پر ان دنوں ایران میں ہیں، انہوں نے ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف سے تہران میں ملاقات کی ہے۔ ملاقات کے دوران ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے پاکستان کو بجلی اور گیس فراہم کرنے کی پیش کش کی ہے۔ ایرانی میڈیا کے مطابق ایرانی وزیر خارجہ اور آرمی چیف جنرل باجوہ کے درمیان ملاقات میں اقتصادی اور سکیورٹی معاملات پر بھی بات چیت ہوئی۔ آرمی چیف اور ایرانی وزیر خارجہ نے اس موقع پر دورانِ گفتگو دہشت گردی، انتہا پسندی، بارڈر سکیورٹی اور منشیات کی اسمگلنگ کی روک تھام پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ ایرانی میڈیا کا مزید کہنا ہے کہ ملاقات میں مسلم ملکوں کے درمیان اتحاد کی ضرورت اور سازشیں ناکام بنانے کے لئے مسلم ملکوں کو چوکس رہنے کی ضرورت پر بھی زور دیا گیا۔
قبل ازیں پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل قمرجاوید باجوہ نے تہران میں اپنے ایرانی ہم منصب میجر جنرل محمد باقری سے ملاقات اور تہران اسلام آباد تعلقات اور علاقائی مسائل پر تبادلہ خیال کیا۔ ایران اور پاکستان کی مسلح افواج کے سربراہوں کے درمیان ہونے والی ملاقات میں دونوں ملکوں کے درمیان عسکری اور دفاعی تعلقات کے فروغ پر بھی زور دیا گیا۔ پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل قمرجاوید باجوہ ایرانی حکام کے ساتھ ملاقات اور باہمی تعاون کو فروغ دینے کی غرض سے اتوار کی شب تہران پہنچے تھے۔

یہ بھی پڑھیں

بھارت میں جنسی زیادتی میں ملوث رکن اسمبلی نے خود کو پولیس کے حوالے کردیا

اتر پردیش:  جنسی زیادتی میں ملوث سماج پارٹی کے رکن اسمبلی اٹل رائے نے خود …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے