فاٹا انضمام کی راہ میں روڑے اٹکانا پختونوں کی جدوجہد کو کمزورکرنیکے مترادف ہے، آفتاب احمد شیرپاؤ

پشاور: قومی وطن پارٹی کے مرکزی چیئرمین آفتاب احمد خان شیرپاؤ نے کہا ہے کہ قبائلی علاقوں کو خیبر پختونخوا میں شامل کرنا قبائلیوں کے دلوں کی آواز ہے، جس سے نہ صرف قبائلی عوام سے طویل عرصہ تک ہونے والی ناانصافیوں کا ازالہ ہوگا بلکہ پختونوں کی آواز بھی موثر ہوگی۔ وطن کور پشاور میں فاٹا یوتھ جرگہ کے ممبران سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آفتاب احمد خان کا کہنا تھا کہ فاٹا کو خیبر پختونخوا میں شامل کرنے کے سلسلے میں آئین میں ریفرنڈم کی کوئی گنجائش نہیں، قبائل اپنے جرگوں میں متفقہ طور پر فاٹا کو صوبہ میں شامل کرنے کی حمایت کر چکے ہیں۔ فاٹا کے خیبر پختونخوا میں انضمام سے خیبر پختونخوا ملک کا دوسرا بڑا صوبہ بن جائے گا، جبکہ پختونوں کی قومی جدوجہد کو بھی تقویت ملے گی۔ قومی وطن پارٹی کے چیئرمین نے کہا کہ قبائل کو قومی دھارے میں لانا وقت کی ضرورت ہے جبکہ فاٹا کو خیبر پختونخوا میں شامل کرنے کے سلسلے میں تاخیر سے پختونوں میں مایوسی و چینی بڑھتی جارہی ہے، لہٰذا الیکشن سے قبل فاٹا کو ہر صورت میں خیبر پختونخوا میں ضم کیا جائے۔ قبائلی نوجوان اور طلباء فاٹا کو خیبر پختونخوا میں شامل کرنے کے سلسلے میں میدان میں نکل پڑے ہیں جبکہ ان کی جدوجہد کو دبانا ناممکن ہے۔ قومی وطن پارٹی کی طرف سے ڈنکے کی چوٹ پر فاٹا کو خیبر پختونخوا میں ضم کرنے کیلئے عملی جدوجہد جاری ہے۔ بعض سیاسی جماعتوں کی طرف سے اس کی مخالفت جبکہ تمام سیاسی جماعتوں، قبائل، قبائلی نوجوانوں اور طلباء کی طرف سے فاٹا کو خیبر پختونخوا میں شامل کرنے کی حمایت کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ فاٹا انضمام کی راہ میں روڑے اٹکانا پختونوں کی جدوجہد کو کمزور کرنے کے مترادف ہے۔

یہ بھی پڑھیں

ڈاکٹرز نے, ہڑتال کرتے ہوئے, ایمرجنسی سروسز کے, سوا تمام, سروسز ,معطل کردیں

ڈاکٹرز نے ہڑتال کرتے ہوئے ایمرجنسی سروسز کے سوا تمام سروسز معطل کردیں

پشاور:خیبرپختونخوا میں ڈاکٹرز کے بڑے پیمانے پر تبادلے، سرکاری اسپتالوں کی نجکاری اور کرپشن کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے