سعودی ولی عہد نے کرپشن کے الزامات لگاکے 11 شہزادوں سمیت 38 شخصیات کو گرفتار کرلیا

ریاض: سعودی ولی عہد نے کرپشن کے الزامات عائد کرکے 11 شہزادوں سمیت 38 سابق و موجودہ وزراء کو گرفتار کرلیا ہے۔ سعودی ولی عہد نے اینٹی کرپشن کمیٹی بنا کر کرپشن کے الزامات میں احتساب کے نام پر یہ گرفتاریاں انجام دی ہیں۔ عرب میڈیا کے مطابق ولی عہد محمد بن سلمان کی سربراہی میں بننے والی کمیٹی نے کرپشن اور منی لانڈرنگ کے خلاف 11 شہزادے 4 وزراء اور درجنوں سابق وزراء گرفتار کرا لئے ہیں۔ گرفتار ہونے والے سابق اور موجودہ وزراء کی کل تعداد 38 ہے جن کے نام تاحال جاری نہیں کیے گئے ہیں۔ کمیٹی کے ممبران میں چیئرمین مانیٹرنگ کمیشن، چیئرمین نیشنل اینٹی کرپشن اتھارٹی، جنرل آڈٹ بیورو کے سربراہ، اٹارنی جنرل اور ریاستی سیکیورٹی کے سربراہ شامل ہیں۔ احتساب کمیٹی نے 2009 میں جدہ میں آنے والے سیلاب اور کرونا وائرس کی تحقیقات پر فائلیں کھول دیں ہیں اور مبینہ ہیرا پھیری کے خلاف بھرپور ایکشن شروع کردیا ہے۔ احتساب کمیٹی چند گھنٹے پہلے ہی تشکیل دی گئی تھی جس نے بنتے ہی ایکشن شروع کر دیا گیا۔ احتساب کے تحت گرفتاریاں تو ایک طرف، سعودی کابینہ میں بڑے پیمانے پر تبدیلیاں بھی ہوئی ہیں۔ سعودی نیشنل گارڈز اور معیشت کے وزیر کو برطرف کردیا گیا ہے۔ سعودی نیوی کے کمانڈر عبداللہ سلطان بھی تبدیل کردیے گئے ہیں اور سعودی نیوی کی کمان فہد الغفلی کو سونپ دی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

سعودی عرب اور امارات اپنے شہریوں کی جاسوسی کر رہے ہیں، اقوام متحدہ

سعودی عرب اور امارات اپنے شہریوں کی جاسوسی کر رہے ہیں، اقوام متحدہ

اقوام متحدہ کی خصوصی رپورٹر نے کہا ہے کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے