ملک کے بیشتر علاقے اسموگ کی زد میں، بجلی غائب، پروازیں منسوخ، ڈاکٹروں کی چاندی

لاہور: ملک کے بیشتر علاقے گہری اسموگ کی زد میں ہیں، جس کے باعث کئی پروازیں منسوخ تو کئی تاخیر کا شکار ہوچکی ہیں۔ ملک کے کئی شہروں میں پاور پلانٹس کی بندش کے باعث بجلی کی شدید لوڈشیڈنگ کا سامنا ہے۔ دوسری جانب فضائی آلودگی کے باعث بننے والی زہریلی دھند سے پھیلنے والی بیماریوں سے شہریوں کی پریشانی میں اور ڈاکٹروں کی چاندی میں اضافہ ہو گیا ہے۔ اسموگ بیماریوں کا سبب ہی نہیں بار بار بجلی جانے کی وجہ بھی بن گئی ہے۔ ملک میں کئی پاور پلانٹ بند کر دئیےگئے ہیں ، جس سے شہروں اور دیہات میں گھنٹوں لوڈشیدنگ جاری ہے، متاثرہ علاقوں میں بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں نےشہروں اور دیہات کیلئے لوڈشیڈنگ کا شیڈول جاری کر دیا۔ ہر گھنٹے بعد ایک گھنٹہ بجلی بند ہو رہی ہے۔ صنعتی اور کمرشل فیڈرز بھی 12 ،12 گھنٹے بند رکھے جائیں گے جب کہ گزشتہ روز کی طرح آج بھی پروازوں اور ٹرینوں کا شیڈول بھی بری طرح متاثر ہوا ہے۔ دوسری جانب ہر طرف چھائی فضائی آلودگی کے باعث بننے والی زہریلی دھند سے پھیلنے والی بیماریوں سے شہریوں کی پریشانی بڑھ گئی۔ بارش نہ ہونے سے اسموگ کی شدت میں دو ہفتے کے دوران اضافہ ہوا ہے۔ چیف میٹرلوجسٹ نے ایک آدھ بارش کو اسموگ کے خاتمے کیلئے ناکافی قرار دیا ہے۔ شدید دھند کے باعث پنڈی بھٹیاں میں چنیوٹ روڈ پر تیز رفتار ٹرک بے قابو ہو کر اُلٹ گیا، حادثہ میں 3 افراد شدید زخمی ہوگئے، زخمیوں کو اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔ حافظ آباداور گردو نواح میں بھی حد نگاہ صفر ہو گیا، موٹروے ایم 2 ، ایم 3 ہر قسم کی ٹریفک کے لیے بند کر دی گئی۔ ساہیو​ال اور جی ٹی روڈ پر شدید دھند کے باعث حد نگاہ 10 میڑ رہ گئی، شدید دھند کے باعث ٹریفک کو لائنوں میں چلایا جا رہا ہے۔ موٹروے پولیس کا کہنا ہے کہ عوام غیر ضروری سفر سے پرہیز کریں اور فوگ لائٹس کا استعمال کریں۔ بورے والا اور گردونواح میں رات 12 بجے سے بجلی بند ہے، بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ سے عوام شدید مشکلات کا شکار ہیں۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز بھی پنجاب بھر میں اسموگ کا راج تھا جب کہ شدید دھند کی وجہ سے مختلف حادثات میں 2 افراد جاں بحق اور 27 زخمی ہوگئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں

رانا ثنا اللہ کے خلاف منشیات برآمدگی کیس کی سماعت

رانا ثنا اللہ کے خلاف منشیات برآمدگی کیس کی سماعت

لاہور: مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی رانا ثنا اللہ کو جوڈیشل ریمانڈ ختم …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے