مدرسے میں 8 سالہ طالب علم زیادتی کے بعد قتل، مہتمم گرفتار

فیصل آباد: پنجاب کے ضلع فیصل آباد میں مبینہ طور پر ایک بچے کو جنسی درندگی کا نشانہ بنانے کے بعد بالائی منزل سے برہنہ حالت میں ہی گلی میں پھینک دیا گیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ بچے کی نعش برہنہ حالت میں گلی میں پڑی تھی جس سے خدشہ ہے کہ بچے کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا اور بالائی منزل پرکارروائی کرتے ہوئے مدرسے کے مہتمم سمیت 5 افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔ فیصل آباد کے علاقے مدینہ ٹاؤن میں 8 سالہ طالب علم عمران تیسری منزل سے گر کر جاں بحق ہوگیا۔ اہل علاقہ کے مطابق چند لوگوں نے لاش صبح 4 بچے گلی میں دیکھی اور مدینہ ٹائون پولیس کو اطلاع دی گئی تاہم باربار طلب کرنے کے باوجود پولیس موقع پر نہ پہنچی اور بچے کی لاش تقریباً 5 گھنٹے گلی میں پڑی رہی۔ پولیس حکام کے مطابق واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی نفری نے جائے حادثہ پہنچ کر لاش قبضے میں لے لی جو برہنہ حالت میں گلی میں پڑی تھی اور ابتدائی تفتیش سے لگتا ہے کہ بچے کو زیادتی کے بعد تیسری منزل سے دھکا دے کر گرایا گیا۔ جب کہ اہل علاقہ کے مطابق عمارت کی دوسری منزل پر ایک مدرسہ ہے اور چند ماہ قبل بھی اسی مدرسے کے بچے نور آغا کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا تھا۔ پولیس نے مدرسے کے مہتمم عبداللہ سمیت 5 طالب علموں کو حراست میں لے کر مزید تفتیش شروع کردی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

بینکنگ کورٹ کی, عمارت میں, اچانک آگ, بھڑک اٹھی

بینکنگ کورٹ کی عمارت میں اچانک آگ بھڑک اٹھی

لاہور : جمعرات کو  مال روڈ پر واقع بینکنگ کورٹ کی عمارت میں گراونڈ فلور …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے